مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پنچاب کے تاجروں کا 80 رکنی وفد وزیر اعلی شہباز شریف کی سربراہی میں یورپی وفود سے ملے گا
لندن ... پاکستان میں عوامی خدمات پر خود کو خادم اعلی کہلوانے پر فخر محسوس کرنے والے ملک کے سب سے بڑے صوبے کے آئینی سربراہ میاں محمد شہباز شریف ملکی معیشت کے استحکام کے لئے لندن میں منعقدہ ورلڈ اسلامک اکنامک فورم میں شرکت کیلئے برطانیہ پہنچ آئے ہیں۔ پاکستان یا برطانیہ میں قومی میڈیا کو بتائے بغیر ولائت پہنچنے والے وزیر اعلی پنچاب اپنے اس دورہ میں صرف ملکی معاشی اور اقتصادی ترقی کے حوالے سے منعقدہ تقریبات میں شرکت کریں گے۔ ورلڈ اسلامک اکنامک فورم کی جانب سے جاری کردہ شیڈول کے مطابق میاں شہباز شریف ٢٩ سے ٣١ اکتوبر تک ایکسل لندن میں منعقد ہونے والی کانفرنس کے اہم ترین مقررین میں سے ایک ہیں۔ وہ مسلم ممالک میں ہونے والی سرمایہ کاری کے حوالے سے منعقدہ ایونٹس میں شرکت کریں گے اور خاص طور پر ٣١ اکتوبر کو صوبہ پنجاب میں سرمایہ کاری کی سہولیات اور اس سلسلے میں حکومتی گارنٹیوں کے حوالے سے لیکچر دیں گے۔ پہلی دفعہ کسی غیرمسلم ملک کے دارالخلافہ لندن میں ہونے والی اس کانفرنس کی اصل محرک برطانوی سینئر وزیر بیرونس سعیدہ وارثی ہیں۔ اس سے قبل ایسی کانفرنسیں صرف مسلم ممالک میں منعقد کی گئیں۔ دریں اثنا اپنے دورہ یورپ کو محض برطانیہ تک ہی محدود نہ رکھنے کے عزم پر قائم میاں محمد شہباز شریف کی سربراہی میں80 تاجروں وصنعتکاروں پر مشتمل وفد برلن میں منعقد ہونے والی ایک روزہ”پاکستان ڈے“ کانفرنس میں شرکت کرے گا۔برلن کانفرنس کے افتتاحی سیشن میں جرمن وزیر خارجہ ڈاکٹر گیڈو ویسٹر ویلے اور وزیر اعلیٰ میاں محمد شہباز شریف کے علاوہ جرمن اسٹیٹ سیکرٹری آف فیڈرل فان آفس،ڈاکٹر ہیرالڈ براؤن اور سٹیٹ سیکرٹری برائے فیڈرل منسٹری آف اکنامکس اینڈ ٹیکنالوجی،انارتھ ہرکس بھی شرکاء سے خطاب کریں گے، جس کے بعد گول میز کانفرنسز،پینل بحث مباحثہ اور بزنس ٹوبزنس میٹنگز کا انعقاد ہوگا۔پاکستان جرمن بزنس فورم کے اشتراک سے ایسوسی ایشن آف جرمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری(ڈی آئی ایچ کے)برلن ان کانفرنسز کا انعقاد کررہا ہے۔ یہ وفد دونوں ممالک کے مابین سفارتی تعلقات کے آغاز سے لے کر اب تک جرمنی کا دورہ کرنے والے وفود میں سب سے بڑا تجارتی وفد ہے۔ توانائی،انفارمیشن ٹیکنالوجی،ٹیکسٹائل،زراعت،دوا سازی،مالی مسائل کے حل،انجینئرنگ،لاجسٹکوسپلائی،گھریلو مصنوعات،آٹوموبائل اور سیاحت سمیت معیشت کے مختلف شعبوں سے پچاس سے زائد کمپنیوں کے ایگزیکٹو سربراہان اور نمائندے پاکستان کی معیشت اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کیلئے موجود منافع بخش مواقعوں سے جرمن سرمایہ کار اور کاروباری حضرات کو آگاہ کریں گے۔