مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر: بھارتی فوج کے مظالم کیخلاف وادی گیر ہڑتال ،حریت پسندوں کے مظاہرے
سرینگر:مقبوضہ کشمیرمیں قابض بھارتی فوج کے مظالم کیخلاف وادی گیر ہڑتال کی گئی اورحریت پسندوں نے آزادی کیلئے مظاہرے کیے ، جھڑپوں کے دوران فوج کی شیلنگ سے متعدد مظاہرین زخمی ہوگئے ۔قابض فوج نے مظاہرین کیخلاف طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق نمازجمعہ کے بعد لوگ سرینگر، بڈگام ، گاندربل، سوپور، بارہمولہ ،بانڈی پورہ،پلوامہ ، ترال ، اسلام آباد ، شوپیاں ، کولگام ، تریہگام،کپواڑہ اور دیگر علاقوں میں سڑکوں پر نکل آئے ۔انہوں نے آزادی اور پاکستان کے حق میں اور بھارت کے خلاف فلک شگاف نعرے بلند کئے ۔ متعدد مقامات پر پاکستانی پرچم بھی لہرائے گئے ۔ بھارتی پولیس اہلکاروں نے مختلف علاقوں میں آنسو گیس کا بے دریغ استعمال کیا جس کے بعد مظاہرین اور پولیس اہلکاروں کے درمیان شدیدجھڑپیں شروع ہوگئیں۔ پولیس کی کارروائیوں میں متعدد افراد زخمی ہوگئے ۔ مظاہرین نے قابض فوج پر شدید پتھرائو کیا۔ادھر مظاہروں کے خوف سے سرینگر اور اننت ناگ کے سکول اور کالجز آج بھی بند رہیں گے ، بھارتی فورسز کی طرف سے دو نوجوانوں اعجاز احمد میر اور بشارت احمد شیخ کی شہادت پر آج سوپور ٹاؤن اور ملحقہ علاقوں میں ہڑتال سے مسلسل دوسرے رو ز بھی نظام زندگی متاثر رہا ۔سبزار احمد بٹ اور دیگرنوجوانوں کی شہادت پر مسلسل ساتویں دن بھی ترال قصبے میں مکمل ہڑتال کی گئی۔ کٹھ پتلی انتظامیہ نے حریت رہنماؤں سید علی گیلانی ، شبیر احمد شاہ، محمد اشرف صحرائی ، مختار احمد وازہ، ظفر اکبربٹ ، ایاز اکبر، محمد اشرف لایا اور شاہدالاسلام کو مظاہروں کی قیادت سے روکنے کے لیے مسلسل گھروں میں نظر بند رکھا۔ انہیں نمازجمعہ بھی ادانہیں کرنے دی گئی۔ وادی کشمیرمیں انٹرنیٹ سروس مسلسل معطل رہی۔حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے جامع مسجد سرینگر میں نماز جمعہ کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ بھارتی قابض انتظامیہ کشمیری عوام کے اتحادد کی وجہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہو کر عالمی برادری کو گمراہ کرنے کیلئے یہ تاثر دینے کی کوشش کرر ہی ہے کہ حریت قیادت صرف کشمیر کے کچھ حصوں تک محدود ہے ۔حریت رہنماؤں محمد یاسین ملک ، شبیراحمد شاہ ، محمد یوسف نقاش، زمردہ حبیب، یاسمین راجہ ، فریدہ بہن جی، آغا سید یعصوب، محمد اقبال میر اور محمد احسن اونتو نے اپنے الگ الگ بیانات میں اعجاز احمد میر ، بشارت احمد شیخ اوردیگر شہد اکو زبردست خراج عقیدت پیش کیاہے ۔ انہوں نے کہاکہ بھارت قتل عام، گرفتاریوں ، خوف و دہشت اور دیگر ظالمانہ ہتھکنڈوں کے ذریعے کشمیریوں کی جاری جدوجہد آزادی کو دبا نہیں سکتا اور کشمیری عوام شہداء کے مشن کو ہر قیمت پر اسکے منطقی انجام تک جاری رکھیں گے ۔ شبیر احمدشاہ شہید نے نوجوانوں کے اہلخانہ سے ٹیلی فون پر بات کی اور ان سے اظہار ہمدردی کیا۔مقبوضہ کشمیر کے سرکاری انسانی حقوق کمیشن نے کشمیری نوجوان کو انسانی ڈھال کے بطور استعمال کرنے کے سلسلے میں سخت نوٹس لیتے ہوئے بھارتی وزارت دفاع کو نوٹس جاری کرتے ہوئے اس ضمن میں اپنی پوزیشن واضح کرنے کے احکامات صادر کئے ۔کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کے رہنما پرکاش کارت نے کہا کہ مودی سرکار مسئلہ کشمیر کا سیاسی حل نکالے ،طاقت کا استعمال اس مسئلے کا حل نہیں ہے ۔وادی میں انٹرنیٹ سروس بحال ہوناشروع ہوگئی۔