مقبول خبریں
lets talk گروپ کے زیر اہتمام کمیونٹی کو ذہنی امراض کی آگاہی کے لیے ورکشاپ کا انعقاد
صادق خان رسوائی کا باعث اور برطانیہ کے دارالحکومت لندن کو تباہ کررہے ہیں: ڈونلڈ ٹرمپ
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
سابق صدر پی ٹی آئی یارکشائر اینڈ ہمبر ریجن طاہر ایوب خواجہ کا اپنی رہائش گاہ پر محفل کا انعقاد
رنگ خوشبو سے جو ٹکرائیں تو منظر مہکے!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
سیاسی،سماجی،کمیونٹی اور مذہبی رہنمائوں کی مانچسٹر ایرینا میں ہونے والے دھماکوں کی مذمت
مانچسٹر:مانچسٹر ایرینا میں میوزیکل کنسرٹ کے دوران دھماکوں سے بے گناہ اور معصوم لوگوں کی جانوں کا ضیاع ایک بزدلانہ کارروائی ہے ہم برطانیہ بھر میں بسنے والے ایشیائی مسلمان اس کی پر زور مذمت کرتے ہیں اسلام امن آپس میں بھائی چارے،محبت و اخوت کا درس دیتا ہے اور جو شر پسند عناصر مذہب اسلام کی آڑ میں ایسے دہشت گردی کے واقعات میں ملوث ہیں مذہب تو دور کی بات وہ انسان کہلانے کے لائق نہیں ہیں ہمارے دل اس دلخراش واقعہ کے بعد انتہائی دکھی ہیں،ان دکھ بھرے جذبات کا اظہار سیاسی،سماجی،کمیونٹی اور مذہبی رہنمائوں چوہدری بشیر احمد رٹوی،سید باسط شاہ مشوانی،چوہدری الطاف شاہد،محمد سلیمان رکھیالوی ایڈووکیٹ،سردار امجد اشرف،کونسلر عتیق الرحمن،راجہ مقصود کاکڑوی،امجد حسین مغل،مولانا عبدالشکور قادری،مولانا شفیق الرحمن شاہین و دیگر نے میڈیا سے فرداً فرداً بات چیت کرتے ہوئے کیا،انہوں نے مزید کہا کہ وہاں پر نوجوانوں کی تعداد زیادہ تھی اور زیادہ تر اپنے والدین کے ساتھ موجود تھے،معصوم جانو ںکا ضیاع انتہائی تکلیف دہ ہے،دکھ،رنج و غم کی اس گھڑی میں ہماری تمام تر ہمدردیاں ان خاندان کے ساتھ ہیں جنکے پیارے اس المناک حادثہ میں لقمہ اجل بنے،ایک بات عیاں ہے کہ شر پسند عناصر کمیونٹی کے اندر انتشار نہیں پھیلا سکتے ہم برطانوی معاشرے کا حصہ اور شہری ہیں اور کمیونٹی کے اندر باہمی ہم آہنگی اور رشتہ مضبوط ہے اس میں کبھی کمی واقع نہیں ہو گی ایسے درندوں کو جلد ڈھونڈ کر قانون کے مطابق کڑی سزا دی جائے تاکہ آئندہ ایسا کوئی کرنے کا مرتکب نہ ہو۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر