مقبول خبریں
تارکین وطن کی فلاح و بہبود وزیر اعظم نواز شریف کی اولین ترجیح ہے:بیرسٹر امجد ملک
پاکستان ہائی کمیشن لندن میں معروف شاعر، کالم نگار عطاء الحق قاسمی کیساتھ یادگار شام
پاکستانی عوام نے 14مئی کے ملین مارچ کے حق میں فیصلہ دے دیا :پی ایس پی برطانیہ
عام آدمی پر کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا، کوئی چیز مہنگی نہیں کی:وزیرخزانہ اسحاق ڈار
مقبوضہ کشمیر: قابض فوج کی فائرنگ، برہان وانی کے ساتھی سمیت 12 نوجوان شہید
سید حسین شہیدسرورکا سیکرٹری تعلیم آزادکشمیرسیدشاہد محی الدین قادری کے اعزازمیں عشائیہ
آکسفورڈ:پاکستانی کمیونٹی کی جمیلہ آزاد اور ثوبیہ آفریدی لیبرپارٹی کے ٹکٹ پر کامیاب
کشمیر مہم: تحریک حق خود ارادیت یورپ نے پارلیمانی امیدواروں سے دستخط لینے شروع کر دیئے
اپنی آنکھیں کھول کے رکھنا طغیانی کے موسم میں
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ میں ٹیلنٹڈ مگر محروم طبقات کیلئے فرینڈز پارٹی موثر پلیٹ فارم ہے: چیئرمین رضوان سلہریا
لندن :لیبر اور ٹوری جیسی بڑی سیاسی پارٹیاں دل سے نہیں چاہتیں کہ ایشیائی لوگ زیادہ تعداد میں پارلیمنٹ میں آئیں، کئی دہائیوں سے پارٹی سے وابستہ ایشیائی افراد کو انٹرویو میں بغیر کسی وجہ سے رد کردیا جاتا ہے یا اگر کوئی ایشیائی ہر حالت میں کامیاب ہوتا نظر آتا ہے تو اسکی نشست کو کسی اور اقلیت کیلئے مختص کردیا جاتا ہے اسی لئے ہم نے پسے ہوئے لیکن ٹیلنٹڈ طبقے کیلئے فرینڈز پارٹی قائم کی ہے جس سے بغیر کسی تعصب رنگ نسل و زبان کے کوئی بھی مرد یا عورت ممبر بن کر ایکشن لڑ سکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار فرینڈز پارٹی کے چیئر رضوان سلہریا نے اپنی پارٹی کے پارلیمانی امیدواروں کے ہمراہ ایک پریس کانفرنس میں کیا۔ انکے امیدوار افضل چوہدری ایسٹ ہیم سے جبکہ کین خان الفورڈ سائوتھ سے آٹھ جون کو ہونے والی قومی انتخابات میں امیدوار ہیں۔ اس موقع پر انکا کہنا تھا کہ ہم فکرمند عام شہریوں کے ایک گروہ کے طور پر یکجا ہوئے، ہم ایک دوسرے کو انتہائی اچھے طریقے سے نہیں جانتے تھے تاہم وقت کے ساتھ ہم دوست بن گئے۔ فرینڈز پارٹی کے رہنمائوں کا کہنا تھا کہ اسی طریقے سے مختلف زندگیوں، عقائد اور تجربات کے حامل عام لوگ مفاہمت سے ایک ساتھ رہنا سیکھتے ہیں اور یوں ایک دوسرے کا احترام کرتے ہیں۔یہی ہماری پارٹی کا عاجزانہ سا نقطہ آغاز ہے۔ وقت کے ساتھ ہم آگے بڑھ رہے ہیں۔ ہمیں ایسے لوگوں، مردوں، عورتوں، نوجوانوں اور قابل احترام بزرگوں کی ضرورت ہے جو ہمارے مقاصد میں ہمارے ساتھ شریک بنیں۔ انکا کہنا تھا کہ ہم اپنی کمیونٹیز کی خدمت کرنا چاہتے ہیں تاکہ وہ بہتر زندگیاں گزار سکیں، انہیں بہتر مستقبل ملے، ایک بہتر انٹرنیشنل ملک کی تعمیر کریں اور روشن محفوظ مستقبل کے لئے مل کر کام کریں۔اپنے پارٹی مقاصد بیان کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ برطانیہ کے باسیوں کی صحت اور فلاح کو فروغ دیں اور عمر، نسلی وابستگی، قابلیت، صنف، عقیدے یا سیاسی وابستگی سے قطع نظر آپس کے اختلافات کے اہمیت کا تسلیم کرتے ہوئے مل کر کام کرنا، برطانیہ اور اس کے مختلف علاقوں میں بحیثیت مجموعی معاشرے میں امیگرنٹ آبادی اور کمیونٹیز کی موجودہ اور سابقہ مثبت خدمات کے بارے میں آگاہی پیدا کرنا اوردیگر تنظیموں اور پارٹیوں کی مدد اور ایڈووکیسی مہمات کے ذریعے برابری اور انصاف کا مقصد حاصل کرنا انکے مقاصد ہیں۔پارلیمانی امیدوارون کا کہنا تھا کہ ہم اپنی صحت، تعلیم، ٹرانسپورٹ، سماجی خدمات، تجارت، رہائش اور ملازمتوں کو بچانے کے لئے کفایت شعاری کے خلاف اقدامات کو فروغ دیںگے۔ہماری پارٹی انسانی حقوق، آزادی اظہار و تقریر کی اس حد تک پاسداری کرے گی کہ کسی دوسرے کی حق تلفی نہ ہو۔ ایک سوال کے جواب مین ان کا کہنا تھا کہ یورپی یونین اور اس سے باہر کے تمام افراد کے لئے مساوی بارڈر کنٹرولز کو یقینی بنائیںگے۔ اس میں کسی قسم کا امتیاز نہ برتا جائے اور دنیا بھر سے آنے والے ماہرامیگرنٹس کو پوائنٹس پر مبنی نظام کے تحت لایا جائیگا۔ایک سوال کے جواب مین انکا کہنا تھا کہ ہماری فوری خدمات ان لوگوں کے لئے ہوں گی جنہیںبرطانیہ میں مفت قانونی خدمات اور معاونت چاہیئے ،رہائش، کرائے، انخلائ، این ایچ ایس، ملازمتی کنٹریکٹ کے سلسلے میں مدد کے لئے اوپن ایڈوائس سیشنز کی فراہمی چاہیئے۔ فرینڈز پارٹی کے پارلیمانی امدواروں کا یہ بھہ کہنا تھا کہ وہ فنڈز جمع کرنے کی کمیونٹی سرگرمیاں، چائے، کھیل، بزرگوں، فیملی اور نوجوانوں کے لئے سوشل کلب کیلئے بھی بھرپور امداد فراہم کرینگے۔