مقبول خبریں
مکس مارشل آرٹ کونسل اور چیریٹی آرگنائزیشن کے زیر اہتمام تقریب کا انعقاد
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر میں سوشل میڈیا پر پابندی فوری ہٹائی جائے: اقوام متحدہ
نیویارک: مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک آزادی کو روکنے کیلئے بھارت نے گزشتہ ماہ ایک نیا اوچھا ہتھکنڈہ آزمانے کی کوشش کی جس کے تحت وادی میں سوشل میڈیا کے استعمال پر پابندی عائد کر دی گئی۔ خیال رہے کہ دنیا بھر کا میڈیا کشمیریوں پر ہونے والی ظلم وزیادتی سے صرف نظر کیے ہوئے ہے۔ ان کی آواز کو دنیا کے سامنے پہنچانے والا کوئی نہیں، اس لیے کشمیری نوجوانوں نے سوشل میڈیا کا سہارا لیا۔ بھارت کی کٹھ پتلی حکومت نے 17 اپریل کو مقبوضہ وادی میں سماجی رابطوں کی 22 بڑی ویب سائٹس جن میں فیس، بک، ٹویٹر، یو ٹیوب اور واٹس ایپ بھی شامل ہیں، پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔اقوام متحدہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں بھارت پر زور دیا گیا ہے کہ وہ فوری طور پر مقبوضہ کشمیر میں سوشل میڈیا کو بحال کرے۔ سوشل میڈیا پر پابندی کشمیری عوام کی آواز اور ان کے بنیادی حقوق کو دبانے کے مترادف ہے۔