مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسلم کانفر نس ہی جموں کشمیر کی سب سے بڑی اورپرانی نظریاتی جماعت ہے:رہنمائوں کا اتفاق
بریڈ فورڈ ...مسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما اور سابق مشیر برائے وزیر اعظم آزاد کشمیر فدا حسین کیانی نے کہا ہے کہ مسلم کانفرنس ریاست جموں وکشمیر کے عوام کی واحد نظریاتی ، سیاسی جماعت ہے جس کو قائم ہوئے اکیاسی (81) سال ہو چکے ہیں جو ہر مشکل دور میں کشمیریوں کے تشخص کی علامت رہی ۔لیکن یہ بڑی بدقسمتی اور المیہ ہے کہ اس قومی ،ریاستی جماعت کو ’’نظر ‘‘ لگ گئی اور اپنوں کی غلطیوں اور پرایؤں کی سازشوں سے آج تاریخ کے آزمائش کن دور سے گزر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کا مستقبل اسی جماعت کے ساتھ وابستہ ہے،مجاہد اول سردار عبد القیوم خان کا سایہ اس پر موجود ہے اور اللہ پاک سے دعا ہے کہ وہ یہ سایہ قائم رکھیں ۔وہ یہاں مسلم کانفرنس بریڈ فورڈ کے سابق صدر راجہ محمد اشفاق کی رہائش گاہ پر جماعتی رہنماؤں راجہ نجابت حسین ، محمد رفیق سہگل،حاجی محمد نجیب،اور مہربان حسین سے بات چیت کر رہے تھے۔فدا کیانی نے کہا کہ مسلم کانفرنس کو تقسیم کرنے کے پس پردہ بہت سے کردار چھپے ہیں جن کے اپنے اپنے مقاصد تھے اور وہ بھی بہت جلد بے نقاب ہوں گے۔ فدا کیانی نے کہا کہ آج ’’ مسلم کانفرنس ‘‘ اور ’’ن‘‘ لیگ پیپلز پارٹی سے کئی گنا زیادہ ووٹ لے کر اقتدار سے باہر ہیں اور پیپلزپارٹی کے مجاور حکومت میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب ایک ’’گھر‘‘ کے افراد آپس میں گتھم تھا ہوکر تقسیم ہو جائیں تو باہر سے داخل ہو کر ڈکیتی کرنے والوں کو دروازے کھلے ملتے ہیں اوربدقسمتی سے مسلم کانفرنس کے ساتھ بھی یہی ہو ا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسلم کانفرنس کو راستے سے ہٹانے کے لئے کئی حربے استعمال کئے گئے ۔پیپلز پارٹی نے اپنے ’’پتے‘‘ بہت ہوشیاری سے کھیلے اور پہلے مسلم کانفرنس کے ہی فارورڈ بلاک کے ساتھ مل کر وزیر اعظم سردار عتیق احمد خان کے خلاف عدم اعتماد کرایا اور پھر سردار عتیق احمد خان کے ساتھ مل کر راجہ فاروق حیدر خان کے خلاف عدم اعتماد کے ذریعے مسلم کانفرنس کی تقسیم کی بنیاد رکھی گئی۔فدا کیانی نے کہا کہ تاریخ کے حقائق کو کوئی نہیں جھٹلا سکتا اور اب ہمیں اپنا اپنا احتساب کرنا ہو گا ۔آج ایک گھر میں نفرت کی دیوار کھڑی ہے ۔اور مخالفین اس سے فائدہ اٹھا کر اپنے مقاصد میں کامیاب ہو رہے ہیں۔دریں اثنا مسلم کانفرنس برطانیہ کے سیکرٹری مالیات چوہدری ذوالفقار محمد کے ساتھ ملاقات میں بھی بات چیت کرتے ہوئے مسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما اور سابق مشیر فدا حسین کیانی نے کہا کہ ماضی میں بھی مسلم کانفرنس کے خلاف کئی دفعہ سازشیں ہوتی رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ مسلم کانفرنس ریاستی عوام کی نمائندہ جماعت ہے جس کی تقسیم کا نقصان تحریک آزادی کشمیر و الحاق پاکستان کو ہواہے ،آج اس کی وجہ سے غیر نظریاتی عنا صر کو آزاد خطے کے اندر اپنے ’’عزائم‘‘ کیلئے کھیل کھیلنے کے مواقع مل رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مسلم کانفرنسی کے نظریاتی کارکنوں اور عہدے داروں کو اس صورت حال کا بغور جائزہ لینا ہو گا اور مستقبل کی ذمہ داریوں سے عہدہ براہ ہونے کیلئے سازشوں کے راستے بند کرنے ہوں گے۔