مقبول خبریں
اوورسیز پاکستانیز فائونڈیشن کو فعال کردار ادا کرنے کیلئے عملی اقدامات اٹھا ئے ہیں:بیرسٹر امجد
نواز شریف کیخلاف عوام نے فیصلہ رد کر کے ثابت کیا وہی اصلی لیڈر ہیں:ن لیگ برطانیہ
تارک وطن بزرگوں نے محنت کا جو بیج بویا تھا آج اسکے ثمرات آنا شروع ہوگئے ہیں
متحدہ بانی سے یاری کا سوال، نبیل گبول آگ بگولا، صحافی سے تلخ کلامی
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی فائرنگ، مزید 2 نوجوان شہید
کونسلر وحید اکبر کا آزاد کشمیر کے جسٹس شیراز کیانی کے ا عزاز میں عشائیے کا اہتمام
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
برما میں مسلمانوں کا قتل عام انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے:وہیپ اینڈریو
کرپٹ خان
پکچرگیلری
Advertisement
پی پی اوورسیز اورپی پی برطانیہ کو فعال کرنے میں کردار ادا کرنا چاہتے ہیں:ابرار میر
لندن : پاکستان پیپلز پارٹی اوورسیز اور برطانیہ پی پی پی کو پہلے کیطرح فعال کرنے میں کردار ادا کرنا چاہتے ہیں تاکہ پاکستان میں پارٹی کی مدد کی جائے۔ ان خیالات کا اظہار ابرار میر سابق ڈپٹی جنرل سیکرٹری پی پی پی برطانیہ نے ایسٹ لندن کے ایک ریسٹورنٹ میں پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ نثار چوھدری، عاصم حسیب، چوھدری رمضان، لئیق احمد، شہزاد گل، شعیب شیخ، عثمان نثار شیخ اور نعمان ابرار میر نے بھی شرکت کی۔ ابرار میر نے اپنے حالیہ دورہ پاکستان سے متعلق آگاہی دی کہ جس میں انہو ں نے جنرل سیکرٹری پی پی پی اور سابق قائمقام صدر اور سابق چیئرمین سینٹ نیئر حسین بخاری، سابق قائمقام صدر اور سابق چئیرمین سینٹ فاروق ایچ نائیک، صدر پی پی پی آزادکشمیر چوہدری لطیف اکبر، سابق سینئر ایڈوائزر آزاد کشمیر حکومت ریاض چوہدری، سابق وزیر آزاد کشمیر فیصل راٹھور اور سینئر صحافی عرفان کیانی سے ملاقاتوں کے ہوالے سے بتایا۔ سابق وزیر مملکت مذہبی امور محترمہ شگفتہ جمانی نے ملاقات کے دوران روائتی سندھی اجرک بھی پہنائی جبکہ سابق وزیر ملک حاکمین خان نے ملاقات میں آپنی کتاب بھی تحفے میں دی۔ اسکے علاوہ مرحومہ فرحت راٹھور کا افسوس فیصل راٹھور سے اور چوہدری نذیر مرحوم کی وفات کا افسوس چوہدری لطیف اکبر سے کیا۔ ابرار میر نے کہا کہ وہ کسی بھی قسم کی گروپ بندی میں نہ پہلے تھے اور نہ آج ھیں۔ انہوں نے کہا گزشتہ آٹھ نو برس سے بحیثیت ڈپٹی اور قائمقام جنرل سیکرٹری اور ممبر ایڈہاک کمیٹی جو خدمات پی پی پی برطانیہ کے حوالے سے ادا کیں وہ سب کے سامنے ہیں اور ہمیشہ پارٹی کی بہتری کیلئے کام کیا۔ اب اسی تجربے کی بنیاد پر میں سیکرٹری جنرل پی پی پی اوورسیز کے علاوہ سیکرٹری جنرل پی پی پی برطانیہ اور سینئر نائب صدر پی پی پی برطانیہ کے عہدے کیلئے امیدوار بنا ہوں۔ ہم نے پہلے بھی اور اب بھی قیادت کے فیصلوں کو من وعن تسلیم کیا اور آئندہ بھی یہی ہوگا۔ قیادت کے ہر فیصلے پہ لبیک کہیں گے اور موقع ملا تو پہلے سے زیادہ قوت سے پارٹی کا کام کرینگے اور ایسا نہ بھی ہوا تو بھی کوئی ملال نہیں ہوگا۔ میں الفاظ سے نہیں بلکہ عملی طور پر اس کا مظاہرہ کیا اور میں نوجوان قیادت بلاول بھٹو زرداری چئیرمین پی پی پی، سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری صدر پی پی پی، انچارج لیڈیز ونگ محترمہ فریال تالپور صاحبہ اور کوآرڈینیشن کمیٹی برائے پی ہی ہی اوورسیز پہ مکمل اطمینان اور اعتماد کا اظہار کرتا ہوں اور شہید بھٹو اور شہید بی بی کے سکھائے ہوئے پارٹی ڈسپلن کا پابند رہونگا۔