مقبول خبریں
سیرت النبیؐ کے پیغام کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لئے میڈیا کا کردار اہم ہے:پیر ابو احمد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
سوشل میڈیاپر مکمل پابندی ،کشمیری قوم کے ساتھ سرا سر زیادتی ہے :سردار امجد اشرف
اولڈہم:عالمی سطح پر مسئلہ کشمیر ایک مرتبہ پھر نظر اندازی کا شکار ہے اور اقوام متحدہ،انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں دوہرے معیار کی وجہ سے اس پر خاطر خواہ توجہ نہیں دے رہی ہیں اور مقبوضہ کشمیر میں بھارتی سکیورٹی ادارے تاریخ کی انسانیت سوز کارروائیوں میں سر عام ملوث ہیں اور وہاں کی تازہ ترین صورتحال بین الاقوامی سطح پر نہ پہنچنے کیلئے سوشل میڈیا اور دوسرے ذرائع پر مکمل پابندی لگا دی ہے جو کہ انسانیت کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے کوئی بھی اس بارے ٹھوس اقدامات اٹھانے سے قاصر ہے یہ کشمیری قوم کے ساتھ سرا سر زیادتی ہے اس کا رد عمل انتہائی خطرناک ہو سکتا ہے،جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برطانیہ برانچ اس کی بھرپور مذمت کرتی ہے،یہ باتیں جماعت کے برطانیہ برانچ کے چیف آرگنائزر سردار امجد اشرف نے میڈیا کے ساتھ ایک بیٹھک کے موقع پر انتہائی جذباتی انداز میں بات چیت کرتے ہوئے کیا،انہوں نے مزید کہا کہ کشمیری قوم کو انکا پیدائشی حق دینا اقوام متحدہ کی اولین ذمہ داری ہے،کشمیری قوم آزادی سے رہنا چاہتی ہے اور ہماری جماعت کشمیر کی مکمل آزادی و خود مختاری پر یقین رکھتی ہے اور آئے دن گلگت بلتستان بارے میڈیا پر یہ خبریں کہ پاکستان اسے صوبہ بنانا چاہتاہے ہم اس کیخلاف صدائے احتجاج بلند کریں گے یہ کسی خفیہ ایجنڈے کی تکمیل کا حصہ ہے،گلگت بلتستان کشمیر کا حصہ ہے تاریخ اس بات کی گواہ ہے خطہ کے امن کو پائیدار اور مضبوط بنانے کیلئے مسئلہ کشمیر کا مستقل حل جو کہ کشمیریوں کی مرضی کے تابع ہو وقت کا اہم ترین تقاضا ہے۔