مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
گلگت،بلتستان کو متنازعہ بنانا تقسیم کشمیر کی ایک گھنائونی سازش ہے:راجہ آفتاب اکرم
مانچسٹر:گلگت،بلتستان کی قانونی اور آئینی حیثیت کو متنازعہ بنانا دراصل تقسیم کشمیر کی ایک گھنائونی سازش ہے،حکومت پاکستان نے اگر اسے صوبہ بنانے کی کوشش کی تو بھرپور مزاحمت کی جائے گی،تحریک آزادی کشمیر اس وقت نازک ترین اور فیصلہ کن موڑ سے گزر رہی ہے،بھارت مقبوضہ کشمیر کے اندر انسانیت سوز کارروائیوں کی بد ترین مئال قائم کر رہاہے اور پاکستان کا حکمران طبقہ سفارتی سطح پر بھارت کی جارحیت بارے احتجاج کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہے اس کی بنیادی وجہ کیونکہ وہ اپنے ذاتی مفادات کو تحفظ دینے کیلئے جان بوجھ کر ایسا کر رہے ہیں،یہ باتیں آزادکشمیر کے سابق مشیر حکومت اور آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس کے مرکزی ایڈیشنل سیکرٹری جنرل راجہ آفتاب اکرم ایڈووکیٹ نے جوں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ کے وائس چیئرمین امجد حسین مغل سے انکی رہائش گاہ پر ایک ملاقات کے دوران کیں،انہوں نے مزید کہا کہ ریاست کی سواد اعظم جماعت مسلم کانفرنس گلگت،بلتستان اور کشمیر کی طرح کھڑی ہو جائے گی اور کامیاب نہیں ہونے دے گی،دوسری طرف بھارت کی افواج نے کنٹرول لائن پر بلا جواز فائرنگ کا سلسلہ شروع کیا ہوا ہے اور بین الاقوامی طاقتیں سرد مہری کا شکار ہیں،اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی علمبردار تنظیموں کی اولین ذمہ داری ہے کہ وہ بھارت پر دبائو ڈالیں اور یہ کارروائیاں بند کروائیں وہ ایسا بوکھلاہٹ کی وجہ سے کر رہے ہیں لیکن اب تحریک آزادی کشمیر کو کچلنا انکے بس کی بات نہیں ہے،مسئلہ کشمیر کے قابل اور پائیدار حل کے بغیر جنوبی ایشیا کبھی بھی امن کا گہوارہ خطہ نہیں بن سکتا یہ ایک مسلمہ حقیقت ہے،اس موقع پر انہوں نے برطانیہ بھر میں بسنے والے کشمیریوں کو مسئلہ کشمیر اور تحریک آزادی کشمیر بارے کردار ادا کرنے پر زور دیا،امجد حسین مغل نے شکریہ ادا کرتے ہوئے انہیں یقین دلایا کہ ہم پہلے بھی اپنا کردار ادا کر رہے ہیں آئندہ اس سے بڑھ کر مزید فعال ادا کرنے کیلئے برطانیہ کے عام انتخابات میں امیدواروں پر مسئلہ کشمیر بارے حمایت کرنے کا مطالبہ کریں گے اور سوچ سمجھ کر ووٹ دیں گے۔خصوصی رپورپ:فیاض بشیر