مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نماز جمعہ کے بعد کشمیر بھر میں مظاہرے، بھارتی فورسز کا پرامن مظاہرین پر تشدد
سرینگر:مقبوضہ کشمیر کے متعدد علاقوں سری نگر، ضلع بارہمولہ اور ضلع اننت ناگ سمیت دیگر میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد قابض بھارت کیخلاف اور پاکستان سے الحاق کے حق میں مظاہرے کیے گئے۔ اس موقع پر بھارتی سیکیورٹی فورسز نے نہتے اور پرامن کشمیریوں کو منتشر کرنے کیلئے بدترین لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا استعمال بھی کیا۔تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں سب سے بڑا مظاہرہ سرینگر میں دیکھنے میں آیا جہاں تاریخی جامع مسجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے فوری بعد کشمیریوں کی ایک بڑی تعداد نے آزادی کے حق میں نعرہ بازی شروع کر دی اور دیکھتے ہی دیکھتے ایک جلوس کی شکل اختیار کر لی۔ قابض سیکیورٹی فورسز نے نہتے مظاہرین کا راستہ روکا اور ان پر لاٹھی چارج شروع کر دیا جبکہ آنسو گیس کا بھی بے دریغ استعمال کیا گیا۔ اطلاعات ہیں مقبوضہ کشمیر کے دیگر علاقوں میں بھی کشمیری مظاہرین کو بدترین ریاستی تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے۔خیال رہے کہ کشمیری قیادت نے سیکیورٹی فورسز کی جانب سے کشمیری طلبہ پر تشدد اور تعلیمی اداروں پر دھاوا بولنے کو ریاستی دہشتگردی کی بدترین شکل قرار دیتے ہوئے عوام سے 21 اپریل بعد نماز جمعہ ایک گھنٹے کا پرامن علامتی احتجاج بلند کرنے کی اپیل کی تھی۔