مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پانامہ کیس فیصلہ:کسی کی فتح یا ہار نہیں ہوئی ،معاملہ مذید پیچیدہ ہو گیا :سیاسی و سماجی راہنما
اولڈہم:پانامہ کیس جو کہ گزشتہ ایک سال سے بھی زائد عرصہ سے پاکستانی سیاست اور عام آدمی کی زد زبان رہا اور پھر سپریم کورٹ میں طویل دلائل بحث و مباحثہ کے بعض بالآخر آج عدالت عظمیٰ نے فیصلہ سناتے ہوئے ایک مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دیکر ساٹھ دنوں کے اندر مکمل تحقیقات کے ساتھ رپورٹ سپریم کورٹ کو پیش کرے اسکی وجہ یہ ہے کہ پانچ ججز میں دو نے وزیر اعظم کی نا اہلی بارے اختلافی نوٹ لکھا ہے،سیاسی جماعتوں کے کارکنان اس فیصلے کے قانونی پہلوئوں کی گہرائی سے مطالعہ کرنے کی بجائے ہمیشہ کی طرح ایک جذباتی قوم ہونے کا بھرپور ثبوت دیتے ہوئے خوشی کا اظہار اور دیگر جذبات کا اظہار کر رہے ہیں جو لمحہ فکریہ ہے س کیس میں کسی کی فتح یا ہار نہیں ہوئی بلکہ یہ معاملہ مذید پیچیدہ ہو گیا ہے جس سے ملکی مسائل میں کمی کی بجائے مزید اضافہ ہو گا جس سے عام آدمی کی زندگی مزید اجیرن بن جائے گی ان ملے جلے خیالات کا اظہار سپریم کورٹ کے پانامہ بارے فیصلہ آنے کے بعد سیاسی،سماجی و کمیونٹی راہنمائوں سید باسط شاہ مشوانی،منور خان نیازی،چوہدری الطاف شاہد،محمد سلیمان رکھیالوی ایڈووکیٹ،امجد حسین مغل،چوہدری شبیر احمد بہملوی،مولانا قاری عبدالشکور قادری نے میڈیا نمائندگان سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہا کہ جب تک پاکستان میں امیر و غریب کیلئے ایک ہی قانون نہیں ہو گا اور عدالتیں قانون کے مطابق بلا تفریق قانون کی بالا دستی کیلئے انتہائی اقدامات نہیں اٹھائیں گی اس وقت ملک کے اندر خوشی و معاشی ترقی نا گزیر ہے اب وقت آ گیا ہے کہ عوام اپنا حق حاصل کرنے کیلئے قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے علم بلند کریں وگرنہ مزید غلامی انکا مقدر بنے گی۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر