مقبول خبریں
سیرت النبیؐ کے پیغام کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لئے میڈیا کا کردار اہم ہے:پیر ابو احمد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بھارت کشمیر میں سنگین جنگی جرائم کا مرتکب ہو رہا ہے: راجہ فاروق حیدر خان
مظفرآباد:وزیر اعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بدترین بھارتی مظالم ، قابض افواج کی ریاستی دہشت گردی ، نہتے کشمیریوں کے قتل عام کے خلاف اور تحریک آزادی کشمیر کی تازہ ترین صورتحال پر آزادکشمیر کی ساری سیاسی قیادت کی مشاورت سے متفقہ لائحہ عمل طے کرنے کے لیے آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کا خصوصی اجلاس 19 اپریل کو طلب کر لیا گیا ہے خصوصی اجلاس کے دوران حکومت تمام سیاسی جماعتوں سے متفقہ لائحہ عمل اور حکمت عملی کی اپیل کرے گی۔ مقبوضہ کشمیر کی عوام نے بھارتی آئین کے تحت انتخابی ڈرامے کو جرات اور دلیری کے ساتھ ناکام بنادیا ہے جس کے بعد ہندوستان اور اس کی قابض افواج بوکھلا گئے ہیں اور انہوں نے وادی میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیاں شروع کر دی ہیں بھارتی فوج جس طریقہ کار اور انداز میں کشمیریوں پر مظالم ڈھا رہی ہے اس طرح اسرائیل نے بھی کبھی نہیں کیا مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم اقوام متحدہ اور عالمی برادری کی مجرمانہ خاموشی کے باعث بھارت کو قتل و غارت گردی کا کوئی خوف نہیں بھارت کشمیر میںسنگین جنگی جرائم کا مرتکب ہو رہا ہے اقوام متحدہ کا انسانی حقوق کمیشن مقبوضہ وادی میں بھارت کے جنگی جرائم کی تحقیقات کے لیے فیکٹ فائنڈنگ مشن کشمیر میں بھیجے پاکستان کے نجی ٹیلی ویژن چینل مسئلہ کشمیر کو اہمیت نہیں دے رہے اور نہ ہی بھارتی مظالم کو بے نقاب کر نے میں اپنی ذمہ داریاں پوری کر رہے ہیں جولائی میں آزاد کشمیر کے دارلحکومت میں کشمیر پر عالمی کانفرنس منعقد کی جائے گی۔ وزیراعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان مرکزی ایوان صحافت میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات منصور قادر ڈار بھی موجود تھے پریس کانفرنس کے دوران وزیراعظم آزادکشمیر نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے مظالم اور جنگی جرائم کو رکوانے کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے کے لیے درخواست جمع کروائے تا کہ سلامتی کونسل کے اجلاس میں بھارتی مظالم کو بے نقاب کیا جا سکے بھارتی مظالم کو عالمی برادری کے سامنے بے نقاب کرنے کے لیے ایسے پارلیمنٹیرینز پر مشتمل وفود دنیا میں بھیجے جائیں جو مسئلہ کشمیر کی واقفیت رکھتے ہوں اس مقصد کے لیے مشیر خارجہ سرتاج عزیز ، سینیٹر راجہ ظفرالحق اور سینٰٹر مشاہد حسین پر مشتمل پارلیمانی وفد تشکیل دیا جائے وزیراعظم آزادکشمیر کا کہنا تھا کہ بیس کیمپ کی حکومت مقبوضہ کشمیر کے حالات سے لا تعلق نہیں رہ سکتی مقبوضہ کشمیر میں عوام کی طرف سے انتخابات کے بائیکاٹ کے بعد بھارت نے جبر و تشدد اور ریاستی دہشتگردی میں بے پناہ اضافہ کر دیاہے بچوں کو بند گاڑیوں میں قید کر کے ان پر تشدد کیا جا رہا ہے۔ نوجوانوں کو سڑکوں پر لٹا کر ان پر بھاری پتھر رکھ دیے جاتے ہیں۔ احتجاج کرنے والوں کو فوجی گاڑیوں کے ساتھ باندھ کر تشدید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے کشمیریوں کے پتھر کے جواب میں ممنوعہ ہتھیار استعمال کیے جار ہے ہیں بھارت مقبوضہ کشمیر میں جس دہشت گردی کا مرتکب ہو رہا ہے اس طرح کے مظالم اسرائیل نے بھی نہیں کیے وزیراعظم آزادکشمیر نے او آئی سی سے مطالبہ کیا کہ وہ بھارت سے ہر قسم کے تعلقات کا بائیکاٹ کرے اور ہندوستان کو مقبوضہ کشمیر میں مظالم سے روکنے کے لیے جاندار اقدامات اٹھائے انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی کشمیر نازک ترین اور فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہو گئی ہے لیکن پاکستان کے پرائیویٹ چینل مسئلہ کشمیر تحریک آزادی اجاگر کرنے اور بھارتی مظالم کو بے نقاب کرنے میں اپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کر رہے جس سے کشمیری مایوس ہیں الیکٹرانک میڈیا کو اپنی پالیسیوں میں کشمیر کے حوالہ سے بہتری لانا ہو گی ان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی بہترین دہشتگردی سے بیس کیمپ کی عوام شدید مضطرب ہے اور عالمی برادری کی طرف دیکھ رہے ہیں عالمی برادری نے اپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کیں تو بیس کیمپ کی عوام لائن آف کنٹرول عبور کرنے پر مجبور ہوں گے۔ بھارت کشمیریوں کو کچلنے کے پالیسی پر گامزن ہے اور دنیا نے چپ سادھ رکھی ہے اقوام متحدہ کے قوانین کے مطابق نہتے لوگوں کو بھارتی ہتھیاروں سے نشانہ بنانا جرم ہے لیکن ان قوانین کا اطلاق کشمیر پر نہیں کیا جا رہا ایک سوال کے جواب میں وزیراعظم آزادکشمیر کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں عوام نے بھارتی آئین کے تحت انتخابات کا بائیکاٹ کیا دو انتخابی مرحلوں میں ٹرن آئوٹ 5 فیصد رہا اور بھارت دنیا کے سامنے بے نقاب ہو گیا ہے ایک دوسرے سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے مسئلہ کشمیر عالمی سطح پر اجا گر کرنے کیلئے بھرپور کردار ادا کیا اور عالمی فورمز پر کشمیریوں کی بھرپور وکالت کی جس پر ان کے مشکور ہیں گلگت بلتستان کے حوالہ سے میاں محمد نواز شریف کوئی ایسا فیصلہ نہیں کریں گے جس سے مسئلہ کشمیر کی عالمی و قانونی حیثیت متاثر ہو پاکستان کشمیریوں کی آئینی و قانونی حیثیت سے بخوبی آگاہ ہے اس موقع پر انہوں نے پاکستان کی تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں کی قیادت اور سول سو سائٹی سے اپیل کی ہے کہ وہ بھارتی مظالم کو دنیا کے سامنے بے نقاب کرنے کے لیے اپنا جاندار کردار ادا کریں ۔