مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
میدان سیاست میں اتارنے سے پہلے پیپلز پارٹی اپنے چیئرمین کی اخلاقی تربیت کرے:علی عباس بخاری
سلاؤ ...منہاج القرآن انٹرنیشنل برطانیہ کے سیکرٹری جنرل سید علی عباس بخاری نے پی پی پی کے چیئرمین بلاول بھٹو کی تقریر کو ایک بچے کی توجہ حاصل کرنے کی ناکام کوشش قراردیتے ہوئے کہا ہےکہ پیپلزپارٹی بلاول کی سیاسی تربیت کاآغاز اخلاقیات سے کرے۔ انھوں نے کہا کہ اسلام آباد میں ڈاکٹر طاہر القادری اور ان کے لاکھوں مداحوں کی قومی سیاسی خدمت اور قربانی کی آج پی پی پی سمیت ہر پاکستانی سیاسی جماعت نہ صرف تائید کر رہی ہے بلکہ برملا طور پر اس بات کا بھی اعتراف کر رہی ہے کہ ڈاکٹر طاہر القادری نے جو کہا تھا وہ سچ تھا۔ علی عباس بخاری نے کہا کہ آکسفورڈ کی گلیوں میں تعلیم حاصل کرنے والے کے منشی نے اس کو کاغذ پر لکھا سبق تو پڑھا دیا لیکن شاید یہ بتانا بھول گیا کہ وہ جس شخصیت کے بارے میں بولنے لگے ہیں اسی ڈاکٹر طاہر القادری کی زیر سرپرستی چلنے والی منہاج القرآن کی لائف ممبر شپ بینظیر بھٹو نے بھی حاصل کررکھی تھی۔ دریں اثنا منہاج القرآن برنلے کے ڈائریکٹر علامہ شمس الرحمن آسی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کا سرمایہ دارانہ اور جاگیردارانہ استحصالی ریاستی نظام ہی تمام سیاسی ،معاشی اور سماجی مسائل کا سبب ہے۔ اس سیاسی و انتخابی نظام کی بنیاد ہی ظلم، ناانصافی اور کرپشن پر قائم ہے جس میں رہتے ہوئے وسائل کی منصفانہ تقسیم ممکن ہی نہیں ہے۔ یہ نظام ناکارہ، ناکام اور فرسودہ ہوچکاہے۔ پاک سرزمین میں سرمایہ دار، جاگیردار، سیاستدان اور بیوروکریٹس اپنے ہی شہریوں کو لو ٹنے میں مصروف ہیں۔ایک عرصہ سے یہ لٹیرے مختلف حربوں کے ساتھ حکومت میں شامل ہوکر یا حکمرانوں سے ملی بھگت کرکے قومی دولت لوٹ رہے ہیں جبکہ عوام خاموش تماشائی ہیں۔عوام اگر قوم بن جائے تو ملک کے فرسودہ اور کرپٹ نظام کو جڑ سے اُکھاڑ پھینک سکتے ہیں۔