مقبول خبریں
عبدالباسط ملک کے والدحاجی محمد بشیر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعائیہ تقریب
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر:مودی کے دورہ پرہڑتال کا اعلان،پلوامہ میں 12نوجوان گرفتار
سری نگر:حریت رہنماؤں نے بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کے دورہ جموں کشمیر پر شٹرڈاؤن ہڑتال کا اعلان کر دیا ہے ۔ حریت قیادت کے مطابق مودی کی 2اپریل کوٹنل کا افتتاح کرنے کے سلسلے میں آمد پر مکمل شٹرڈاؤن کیا جائے گا۔ دریں اثنا بھارتی پولیس نے بھارت مخالف مظاہروں کی پاداش میں ضلع پلوامہ کے علاقے آری ہل سے کم سے کم12 نوجوانوں کو گرفتار کرلیا ہے ۔ گرفتاریوں پرحریت رہنمائوں نے اظہارمذمت کیا ۔میرواعظ عمرنے کہا ہے کہ بھارت نوشتہ دیوار پڑھ لے ۔انہوں نے چاڈورہ میں شہید نوجوانوں کو خراج عقیدت بھی پیش کیا ہے ۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق پلوامہ میں پولیس نے گزشتہ شب گاؤں میں رات کے وقت چھاپوں کے دوران 12 نوجوانوں کو بھارت مخالف مظاہروں میں شرکت کرنے پر گرفتار کرلیا۔گزشتہ ہفتے پولیس نے ضلع کے مختلف دیہات سے کم سے کم ساٹھ سے زائد نوجوانوں کو گرفتار کیا تھا۔سیدعلی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے چھاپوں کے دوران نوجوانوں کی گرفتاری پر کٹھ پتلی انتظامیہ کی شدید مذمت کی ہے ۔ حریت قیادت نے نوجوانوں کے خلاف کریک ڈاؤن کو بھارتی ریاستی دہشت گردی قراردیا ہے ۔دریں اثنا حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے چاڈورہ میں نہتے کشمیریوں پر بھارتی فورسز کی فائرنگ کے نتیجے میں تین نوجوانوں کے قتل اور درجنوں کو شدید زخمی اور پیلٹ گن کے استعمال سے کئی افراد کی بینائی متاثر ہونے کی شدید مذمت کی ہے ۔ انہوں نے ایک بیان میں کہاکہ بھارت اور اس کی کٹھ پتلی انتظامیہ کشمیرمیں تمام مسلمہ جمہوری اور انسانی اصولوں کو بالائے طاق رکھ کرنہتے کشمیریوں کا قتل عام کررہی ہے ۔ انہوں نے تینوں نوجوانوں کے قتل کے بعد کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی طرف سے اظہار افسوس کو کشمیریوں کے ساتھ ایک بھونڈا مذاق قراردیتے ہوئے کہاکہ وہ خود ان نوجوانوں کے قتل کی ذمہ دار ہیں۔