مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان پریس کلب برطانیہ کی اسلام کے نام پردہشت گردانہ کاروائیوں کی بھرپور مذمت
لندن ... برطانیہ میں مقیم مسلمان برطانیہ کے وفادار ار پیار کرنے والے لوگ ہیں،مسلمانوں کا نام رکھ کر یا حلیہ اپنا کر دہشت گردی کی وارداتوں میں ملوث افراد کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں، اسلام اور پاکستان خود ایسی مذموم کاروائیوں کا شکار ہیں، دنیا کو یہ حقیقت جاننا ہوگی کہ حالت جنگ میں بھی کمزوروں کا خیال رکھنے کا درس دینے والا مذہب عام زندگی میں کس طرح معصوم افراد کی جانیں لے سکتا ہے، مذہب کی آڑ لیکر جو کوئی بھی برطانیہ کو نقصان پہنچاتا ہے ہم اسکی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہارمقررین نے گذشتہ دنوں پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر ایک دہشت گرد حملے میں مرنے والوں سے اظہار یکجہتی کیلئے منعقدہ تقریب میں کیا جسکا اہتمام پاکستان پریس کلب یوکے نے کیا تھا۔ فرینڈز آف پریس کلب کے چیئرمین ڈاکٹر اشرف چوہان ، ممبر پارلیمنٹ مائیکل ڈگر، سابق وزیر اعلیٰ کے پی کے پیر صابر شاہ، برٹش مسلم فرینڈز آف لیبر کے چیئرمین چوہدری شوکت علی، سابق قومی کرکٹر یونس احمد، تھرڈ ورلڈ سالیڈیریٹی کے چیئرمین مشتاق لاشاری، بیرسٹر نسیم، بیرسٹر ذیشان میاں کے علاوہ صحافیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ 22مارچ کو لندن ویسٹ منسٹر میں دہشت گردی میں ہلاک ہونے والوں کی فیملیز اور برطانوی قوم کے ساتھ اظہار یکجہتی کی مناسبت سے منعقدہ اس تقریب میں شمعیں بھی روشن کی گئیں۔چیئرمین فرینڈز آف پاکستان پریس کلب ڈاکٹر اشرف چوہان نے صحافی کمیونٹی رہنماؤں اور مقامی تاجروں سمیت مراکش میں پاکستان کے سفیر ڈاکٹر اشتیاق بیگ سابق وزیر اور ممبر آف پارلیمنٹ مائیکل ڈگر ایم پی کا کیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس موقع پر متحد ہیں اور برطانیہ کے بہتر مستقبل کے لئے دعا گو ہیں۔ نظامت کے فرائض جنرل سیکرٹری عطاء الحق نے سرانجام دئیے۔ سید صابر شاہ نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ اقوام عالم کو وہ حکومت پاکستان اور پاکستانی قوم کی جانب سے یقین دلاتے ہیں کہ ہم نے پاکستان میں دہشت گردوں کے خلاف کمر کس لی ہے اور بہت جلد دہشت گردوں سے فری پاکستان بنانے کے لئے منصوبہ بندی کی جاچکی ہے اور آپریشن ضرب عضب کے بعد آپریشن ردالفساد لاؤنچ کیا گیا ہے اور آخری دہشت گرد کے خاتمے تک ہم پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے دہشت گردوں کے خلاف جنگ ڈیکلیئر کردی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم خود دہشت گردی کا شکار ہیں اس لئے برطانیہ میں ہونے والے دہشت گردی کے سانحے کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والوں کا اندوہناک غم سمجھتے ہیں انہوں نے کہا کہ اسلام کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ برطانیہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی نے جس طرح بڑھ چڑھ کر یہاں اپنی قوم کی ترجمانی کی ہے وہ اس پر انہیں مبارکباد دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی برطانیہ میں ہونے والی دہشت گردی کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔ مرزا اشتیاق بیگ نے کہا کہ لندن میں ہونے والے دہشت گردی کے حملے کی وہ بھرپور مذمت کرتے ہیں اور انہیں یہ جان کر بے حد خوشی ہے کہ مسلمانوں کی اکثریت اور سب پاکستانیوں نے دہشت گردی کے اس حملے کی بھرپور مذمت کی ہے۔ مائیکل ڈگر ایم پی نے کہا کہ پاکستان پریس کلب کے اس فنکشن میں آکر یہ جان کر خوشی ہے کہ پاکستانی صحافیوں اور کمیونٹی لیڈروں نے برطانیہ کے ساتھ اظہار یکجہتی کی مثال قائم کی ہے۔ انہوں نے میزبان ڈاکٹر اشرف چوہان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی اور مسلمان برطانیہ کے معاشرے میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں اور اسلام کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ یہ ایک پرامن مذہب ہے۔ پاکستان پریس کلب یو کے قائمقام صدر شیراز خان نے پاکستان پریس کلب یو کے تمام ممبران کمیونٹی لیڈروں کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان پریس کلب یو کے ورکنگ جرنلسٹوں کا پلیٹ فارم ہے اور دہشت گردی کی بھرپور مذمت کرتا ہے اور ہم اس وقت سب اکٹھے ہیں۔ایڈیٹر روزنامہ اوصاف لندن مبین چوہدری کا کہنا تھا کہ ہم پاکستانی جرنلسٹ برطانیہ کو اپنا ملک سمجھتے ہیں اور اس کے مفادات کا تحفظ کرنے کی یقین دہانی کرواتے ہیں اور برطانیہ میں پاکستانی صحافی برطانیہ اور پاکستان کے درمیان رابطوں کو مضبوط بنانے میں برج کا کردار ادا کرتے رہیں گے۔معروف صحافی مرتضیٰ علی شاہ کا کہنا تھا کہ یہ جان کر بے حد خوشی ہوئی کہ برطانوی میڈیا نے اسلام اور مسلمانوں کے خلاف منفی خبریں نہیں چلائی ہیں۔ سابق کرکٹر شوکت احمد، سابق کونسلر مشتاق لاشاری، کونسلر شوکت حسین، مسلم لیگ (ن) برطانیہ کے سینئر نائب صدر ناصر بٹ، نواز شریف لورز کے چیئرمین ملک ریاض اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ برطانیہ میں دہشت گردی کے بعد برطانوی قوم کو متحد کردیا ہے اور یہاں آباد تمام کمیونیٹیز کے لوگوں نے بیک وقت کھل کر مذمت کی ہے اور جان بحق ہونے والوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا ہے۔ناصر بٹ کا کہنا تھا کہ برطانیہ ہمارا ملک ہے اور اس کے مفادات کا تحفظ کرنا ہمارا فرض ہے۔ اس موقع پرکلب کے کے نائب صدر اکرم عابد، انفارمیشن سیکرٹری نوید سجاد چوہدری، ایگزیکٹو ممبر افضل چوہدری، نسیم صدیقی، انجینئر اسد شاہ، نصیر احمد،مونا خان اور دیگر صحافتی شخصیات سمیت پاکستانی کمیونٹی نے شرکت کی۔