مقبول خبریں
سیرت النبیؐ کے پیغام کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لئے میڈیا کا کردار اہم ہے:پیر ابو احمد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بھارتی فورسز کے ہاتھوں4 بے گناہ کشمیریوں کی شہادت پر ریاست بھرمیں ہڑتال
سری نگر:قابض بھارتی فورسز کے ہاتھوں 4 بے گناہ کشمیریوں کی شہادت پر ریاست بھرمیں مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال رہی،شہداکی نمازجنازہ میں ہزاروں افرادنے شرکت کی جبکہ ہندوستانی جبر کیخلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کئے گئے ،مظاہرین اورفورسزکے درمیان جھڑپیں بھی ہوئیں جبکہ درجنوں افرادگرفتارکرلئے گئے ،نئی احتجاجی لہر سے ڈر کر کٹھ پتلی انتظامیہ نے حریت رہنماؤں کو گھروں میں نظر بند کرکے مقبوضہ وادی میں کرفیونافذکردیا۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق منگل کے روزبڈگام میں بھارتی فورسزکی فائرنگ سے شہیدہونیوالے 4نوجوانوں کوسپردخاک کردیاگیاجبکہ حریت قیادت کی اپیل پرمقبوضہ وادی میں تمام دکانیں، تجارتی مراکز،سکول، پیٹرول پمپ، دفاتر بنداورسڑکوں پر گاڑیوں کی آمد و رفت معطل رہی،دریں اثناکشمیر یونیورسٹی، اسلامک یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اور سنٹرل کشمیر یونیورسٹی نے ہڑتال کے پیش نظرتمام امتحانات ملتوی کردئیے ، بھارتی جبروتشددکیخلاف وادی بھرمیں لوگ سڑکوں پرنکل آئے اورآزادی کے حق میں فلک شگاف نعرے بازی کی،قابض فورسزنے مظاہرین کومنتشرکرنے کاطاقت کاوحشیانہ استعمال کیاجس سے متعدد افرادزخمی ہوگئے جبکہ مختلف علاقوں میں درجنوں کشمیری گرفتارکرلئے گئے ۔دریں اثناکٹھ پتلی انتظامیہ نے کرفیونافذکرتے ہوئے سیدعلی گیلانی ،میر واعظ عمر فاروق،یاسین ملک،شبیر احمد شاہ، محمد اشرف صحرائی، آسیہ اندرابی، نعیم احمد خان، مختار احمد وازہ، ظفر اکبر بٹ، ایاز محمد اکبر، راجہ معراج الدین کلوال اور عمر عادل ڈارسمیت دیگرحریت رہنماؤں کوتھانوں،جیلوں اورگھروں میں نظربندکردیا۔مزیدبرآں بھارتی پولیس نے نام نہاد کشمیر اسمبلی کے رکن انجینئر رشید کوبھی سرینگر میں درجنوں ساتھیوں سمیت گرفتار کرلیا، وہ نوجوانوں کے قتل کیخلاف احتجاج ریکارڈ کرانے کیلئے کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی رہائش گاہ کی طرف ایک مارچ کی قیاد ت کر رہے تھے ۔علاوہ ازیں سری نگرمیں پولیس نے بھارتی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے کے بعدہسپتال میں دم توڑنے والے نوجوان زاہدرشیدکی میت لے جانے والی ایمبولینس روک لی اورلواحقین سے بدتمیزی کی،اسی دوران لوگ وہاں جمع ہوگئے اوربھارتی فورسزکیخلاف احتجاج شروع کردیا،مظاہرین کومنتشرکرنے کیلئے پولیس نے آنسوگیس کے گولے داغے جس سے کئی افرادزخمی ہوگئے جبکہ ایمبولینس کومیت سمیت تحویل میں لے لیاگیا۔دوسری جانب مودی سرکارنے مقبوضہ کشمیر میں مظاہروں کو روکنے کیلئے فورسزکو پیلٹ گن کے ساتھ ساتھ ایک اور مہلک ہتھیارمسالے دار جیلی سے بھرے گرنیڈزاستعمال کرنے کا اختیاردیدیا،اسکے پھٹنے سے پیدا ہونیوالی گیس سے آنکھو ں میں شدید جلن اورسانس لینے میں مشکل ہوتی ہے ،یہ فیصلہ بھارتی سیکرٹری داخلہ راجیومہریشی کی زیرصدارت اجلاس میں کیاگیاجوکہ پیلٹ گن کے استعمال پربڑھتی تنقیدکے پیش نظربلایاگیاتھا۔