مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر میں ڈھونگ انتخابات کیخلاف مظاہرے ،پولیس کا تشدد، جھڑپیں
سرینگر :مقبوضہ کشمیر میں ڈھونگ انتخابات کیخلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کئے گئے ۔ سوپور میں لوگوں نے نماز جمعہ کے بعد ایک بڑی ریلی نکالنے کی کوشش کی لیکن بھارتی فورسزنے طاقت کے بل پر انہیں روکا،لاٹھی چارج اور شیلنگ کی،جس پر جھڑپیں شروع ہوگئیں ، متعد افراد زخمی ہوئے ۔ سرینگر ، بڈگام، گاندربل ، بارہمولہ، پلہالن ، اسلام آباد ، ترال ، پلوامہ ، شوپیاں، کولگام ، کپواڑہ ، بانڈی پورہ ، حاجن او ر دیگر علاقوں میں بھی ڈھونگ انتخابات کیخلاف ریلیاں نکالیں، متعدد مقامات پر پاکستانی جھنڈے بھی لہرائے گئے ۔ دریں اثناکٹھ پتلی انتظامیہ نے انتخابات کے بائیکاٹ کی مہم سے روکنے کیلئے کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق، یاسین ملک، شبیر شاہ،نعیم خان ،آسیہ اندرابی، اشرف صحرائی، ظفر اکبر بٹ اور دیگر حریت رہنمائوں کو مسلسل گھرو ں، تھانوں اور جیلوں میں نظر بند رکھا۔بھارتی پولیس نے گزشتہ چند روز کے دورا ن پلوامہ، شوپیاں اور اسلام آباد کے علاقوں سے ڈیڑھ سو سے زائد افرادکو گرفتار کیاہے ۔گرفتار ہونے والوں میں واٹس اپ گروپس کے 30سے 35 ایڈمنسٹریٹرز بھی شامل ہیں۔سیدعلی گیلانی ، میر واعظ عمرفاروق اوریاسین ملک اور دیگر حریت قیادت نے نو اور بارہ اپریل کو سرینگر اور اسلام آباد کے حلقوں میں ہونے والے ڈھونگ انتخابات کے مکمل بائیکاٹ کی اپیل کی۔دوسری جانب مقبوضہ کشمیرکی کٹھ پتلی انتظامیہ نے نام نہاد انتخابات کیلئے بھارتی سینٹرل ریزروپولیس فورس کی 250اضافی کمپنیاں مانگ لیں۔جبکہ جموں وکشمیر مسلم لیگ کے چیئرمین مسرت عالم بٹ کو 31مارچ تک جوڈیشل ریمانڈ پر سب جیل بارہمولہ بھیج دیا گیا۔