مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر:میرواعظ عمر فاروق اوریاسین ملک گرفتار،صحافیوں پر بھی تشدد
سرینگر/واشنگٹن:حریت رہنما سید علی گیلانی سے ملنے جانیوالے قائدین میر واعظ عمر فاروق اور یاسین ملک کو گرفتار کر لیا گیا،وادی میں احتجاج،پولیس نے مظاہرین کی کوریج کرنے پر دو صحافیوں کو تشدد کا نشانہ بنا ڈالا ۔ امریکی محکمہ خارجہ نے 2016کیلئے انسانی حقوق کے متعلق کنٹری رپورٹ امریکی کانگرس کو پیش کردی ۔جس میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کو موضوع بنایا گیا ہے ۔تفصیلا ت کے مطابق حریت رہنما میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک مستقبل کی حکمت عملی کے بارے میں تبادلہ خیال کی غرض سے کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سیدعلی گیلانی جو گھر میں نظربند ہیں سے ملاقات کیلئے حیدرپورہ سرینگرپہنچے تو وہاں تعینات پولیس اہلکاروں نے انہیں ملاقات سے روک دیا ۔ انتظامیہ کے اس اقدام کے خلاف درجنوں حریت رہنماء اور کارکنوں نے زبردست بھارت مخالف مظاہرہ کیا اور بھارت کے خلاف اور آزادی کے حق میں نعرے بلند کئے ۔ میر واعظ اور یاسین ملک سید علی گیلانی کی رہائش گاہ کے باہر سڑک پرکھڑے تھے جب حریت چیئرمین پولیس اہلکاروں کا محاصرہ توڑتے ہوئے سڑک پر نکل آئے اور تینوں رہنماؤں نے احتجاج شروع کیا ۔پولیس اہلکاروں نے تینوں حریت رہنماؤں کو گرفتار کرلیا ہے ۔ پولیس اہلکاروں نے مظاہرے کی کوریج کرنے والے دو صحافیوں توصیف مصطفی اور مبشر خان کو تشدد کا نشانہ بنایا ۔کپواڑہ کے علاقے جگتیال میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں سات سالہ بچی کنیزہ کی شہادت پر علاقے میں لوگوں نے زبردست احتجاجی مظاہرے کئے اور اس واقعہ کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ادھر امریکی محکمہ خارجہ نے ایک رپورٹ میں گزشتہ سال کے انتفادہ کے دوران مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں کشمیریوں کے قتل عام اور پیلٹ گن کے بے دریغ استعمال پر روشنی ڈالی ہے ۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ نے ‘‘2016کیلئے انسانی حقوق کے بارے میں کنٹری رپورٹ ’’امریکی کانگرس کو پیش کی ہے جس میں کہاگیا ہے کہ مہلک پیلٹ گن کے استعمال سے گزشتہ سال جموں وکشمیر میں فورسزنے 87سے زائد کشمیریوں کو شہید اور بچوں سمیت سینکڑوں افراد کو بینائی سے محروم کردیا ۔جمہوریت انسانی حقوق اور محنت کے بارے میں بیوروکی طرف سے مرتب کردہ 64صفحات پر مشتمل رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ مقبوضہ کشمیرمیں رائج کالے قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کو کشمیریوں کے قتل عام کی کھلی چھوٹ حاصل ہے ۔ رپورٹ کے مطابق 2016ء میں جنوری سے اکتوبر کے دوران 223کشمیریوں کو قتل کیاگیا جبکہ گزشتہ سال اسی عرصے کے دوران 174کشمیریوں کو شہید کیاگیا تھا ۔ رپورٹ میں کہاگیاہے کہ جموں وکشمیرمیں انتظامیہ پر امن احتجاج کے حق کا احترام نہیں کر رہی ۔گزشتہ سال انتظامیہ نے وادی کے تمام دس اضلاع میں مسلسل 53روز تک کرفیونافذ اور موبائل سروس معطل رکھی گئی۔