مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر:بھارتی پولیس کے کیمپ پر حملہ،عوام نے محاصرہ کرنے والی فوج کو بھگا دیا
سری نگر:مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ کے گاؤں ترال کے نواح میں سنٹرل ریزروپولیس فورس کے کیمپ پر گرنیڈسے حملہ کیاگیااوربعدازاں فائرنگ کی گئی ،ضلع پلوامہ ہی کے گاؤں وار ورن میں عوام نے سڑکوں پر آکر بھارتی فوج کو بھاگنے پر مجبور کردیا،اننت ناگ میں بھارتی فوج نے احتجاج کرنیوالوں پر تشددکرکے بیسیوں افراد کو زخمی کردیا۔تفصیلات کے مطابق ضلع پلوامہ کے گاؤں ترال کے نواحی علاقے نوڈال میںسنٹرل ریزروپولیس فورس کے کیمپ پر گرنیڈ حملہ اورفائرنگ کی گئی ۔پولیس کاکہناہے کہ حملہ کرنیوالے نوجوان کا نام غلام محمد غنی ہے اوروہ ترال کا رہائشی ہے ،اسے گرفتار کرکے اس کے قبضے سے گرنیڈ اور پستول بھی برآمد کرلیاگیاہے ،حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہواتاہم کیمپ کو نقصان پہنچاہے ۔ بھارتی فوج نے گزشتہ روز ضلع پلوامہ کے قصبے وار ورن کامحاصرہ کرکے گھر گھر تلاشی کا آغاز کیا توسینکڑوں کی تعداد میں مردوزن ، بوڑھے اور بچے گھروں سے باہر آکر احتجاج کرنے لگے اور انہوں نے فورسز کو تلاشی لینے سے روک دیا۔اسی دوران مقامی مساجد کے لائوڈ سپیکروں پر نعرے بازی کی گئی اور لوگوں سے گھروں سے باہر آنے کی اپیل کی گئی اور دیکھتے ہی دیکھتے نیوہ ، نامن بارہ بل اور کا کہ پورہ سے لوگوں کا ہجوم موقع پر پہنچ گیا۔ فوج نے جب انہیں منتشر کرنے کی کوشش کی تو لوگ مشتعل ہوگئے اور انہوں نے بیک وقت کئی اطراف سے فورسز پر زبردست پتھرائو شروع کیا،فوج نے لاٹھی چارج کیااور آنسو گیس کے گولے پھینکے تاہم اہلکار مزاحمت کا سامنانہ کرتے ہوئے بھاگنے پرمجبورہوگئے ۔جنوبی کشمیر کے اننت ناگ قصبے اور اس کے ملحقہ علاقوں میں میر واعظ جنوبی کشمیر قاضی یاسرکی گرفتاری کے خلاف احتجاج کرنے کے دوران بے قابو ہجوم کو منتشر کرنے کیلئے پولیس و فورسز نے آنسوگیس کے گولے داغے ،پیپر گیس اور لاٹھی چارج بھی کیا ،جس سے بیسیوں افراد زخمی ہوگئے ۔مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے حکام نے گزشتہ 50روز کے دوران 22کشمیریوں کو شہید کرنے کا اعتراف کرلیا ہے ۔ فوجی حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ شہید ہونے والے کشمیری مجاہدین تھے جن کو جھڑپوں کے دوران شہید کیا گیا ۔ ان کاکہناہے کہ 2017 کے پہلے دو ماہ کے دوران مقبوضہ کشمیر میں ایک میجر سمیت بھارتی فوج کے 26 اہلکار بھی ہلاک ہوئے ۔ محمد حسین فاضلی کو دہلی بم دھماکوں کے کیس میں11سال تک غیر قانونی طور پر نظربند رکھنے کے بعد دہلی کی ایک عدالت نے بے گناہ قراردے کر رہا کردیا ۔ فاضلی کے گھر پہنچنے پرسرینگر میں اس کے رشتہ داروں اور ہمسا یوں نے گرمجوشی سے اس کا استقبال کیا۔مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ وقت آگیا ہے کشمیری عوام اپنی تقدیر کا فیصلہ کریں۔ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ترقی کیلئے امن ضروری ہے ۔