مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
کشمیری نژاد برطانوی شہری بیرسٹر فیاض افضل نےبحیثیت ڈسٹرکٹ جج عہدے کا حلف اٹھا لیا
ڈربی:قدرت نے انسان کے اندر وہ تمام خوبیاں پیدا کی ہوئی ہیں جن کا بعض اوقات ہم اندازہ نہیں کر سکتے اور جو انسان بھی اس دنیا میں آیا ہے اسےمقصد کیلئے بھیجا گیا ہے ایسی ہی ایک مثال آج ڈربی میں آنکھوں سے معزور ایک نابینا کشمیری نژاد برطانوی شہری بیرسٹر فیاض افضلOBEکی ہے جنہوں نے ڈربی کمبائنڈ کورٹ سنٹر میں بحیثیت ڈسٹرکٹ جج کے اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے،اس موقع پر انہوں نے کہا کہ میرا تعلق ایک ایسے گھرانے سے ہے جن کا کوئی فرد بھی قانون کے پیشے سے وابستہ نہیں ہے میں واحد شخص تھا جس نے یونیورسٹی میں جا کر تعلیم حاصل کی اور اپنے نابینے پن کو کبھی اپنے اعصاب کے اوپر حاوی نہیں ہونے دیا،انہوں نے کہا کہ والدین کی دعائیں اور انکی مدد تعاون ہروقت میرے ساتھ رہا یہی وجہ ہے کہ ترقی کی منزلیں طے کرنے میں کبھی رکاوٹ کا سامنا نہیں کرنا پڑا اگر انسان سخت محنت کو اپنا شعار بنا لے تو جس کام کی بھی ٹھان بے کامیابی قدم چومتی ہے،انہوں نے کہا کہ جب انہیں اس بات پر فخر ہے کہ برطانیہ بھر میں عالباً وہ پہلےفرد ہیں جو نابینا ہونے کے باوجود جج کے عہدے پر فائزہوئے ہیں اس سے کمیونٹی کے اندر خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے،انہوں نے کہا کہ انہیں2008میں ملکہ برطانیہ کی طرف سےOBEکے ایوارڈ سے نواز گیا،2010میں ڈپٹی جج کی حیثیت سے ذمہ داریاں نبھائیں اور2015سے ریکاڈر کی حیثیت سے کام کیا،سماجی و کمیونٹی کی سرگرمیاں میں انکا کردار نمایاں ہے انکے خاندان دوست احباب نے کہا کہ وہ معزور افراد کیلئے ایک رول ماڈل کی حیثیت رکھتے ہیں،انکے ساتھیوں نے انکے عہدہ سنبھالنے کو انتہائی خوش آئند قرار دیا اور کہا کہ وہ ہر لحاظ سے اس کے مستحق تھے،اس سے کمیونٹی کو آپس میں ملانے اور باہمی تعلقات کوفروغ ملے گا،یاد رہے کہ موصوف کا تعلق آزاد کشمیر کے علاقہ راجدھانی سے ہے اور کمیونٹی کے اندر انکا خاندان ایک نمایاں مقام و حیثیت رکھتا ہے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر