مقبول خبریں
مکس مارشل آرٹ کونسل اور چیریٹی آرگنائزیشن کے زیر اہتمام تقریب کا انعقاد
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
سرینگر میں گرنیڈحملہ‘2بھارتی پولیس اہلکارزخمی ‘سرچ آپریشن شروع
سرینگر :مقبوضہ کشمیر میں سرینگر کے علاقے نوگام میں نامعلوم افراد کے گرنیڈ حملے میں دو بھارتی پولیس اہلکار زخمی ہو گئے ۔سابق کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ پر جوتا پھینکنے والا کشمیری پولیس اہلکار چل بسا۔حریت قیادت نے سیہون شریف میں بم دھماکہ کی مذمت کرتے ہوئے اسے بدترین دہشت گردی قرار دیدیا۔تفصیلات کے مطابق پولیس اہلکاروں پر گرنیڈ حملہ سرینگر کے نواحی علاقے نوگام میں کیا گیا،زخمی اہلکاروں کی شناخت سلیکشن گریڈ کانسٹیبل محمد عباس نمبر769اور کانسٹیبل رمیز یوسف (13بٹالین پولیس)کے نام سے کی گئی ،واقعہ کے فوراً بعد بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں نے علاقے کا محاصرہ کر کے حملہ آوروں کی تلاش شروع کر دی۔ 2010میں کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ عمر پر سرینگر میں جوتا پھینکنے والا کشمیرپولیس سے وابستہ اہلکار عبدالاحد جان ہفتہ کی صبح اپنے آبائی علاقے بانڈی پورہ میں وفات پا گیا۔ترجمان حریت کانفرنس نے ایک بیان میں کہاہے کہ کٹھ پتلی حکومت نے مقبوضہ کشمیر کو جیل خانے میں تبدیل کردیا ہے ، ہم سید علی گیلانی کی گزشتہ چھ برس سے زائد عرصے سے گھر میں مسلسل غیر قانونی اور بلا جواز نظر بندی کی شدید مذمت کرتے ہیں ۔لال شہباز قلندر کے مزار پر ہونے والے خودکش حملے کی مذمت کرتے ہوئے حریت رہنماؤں نے کہا کہ اس طرح کی حرکتوں میں ملوث لوگ کسی بھی طور پرانسان کہلانے کے قابل نہیں ہیں۔