مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانوی پارلیمنٹ میں قومی کشمیر کانفرنس کا انعقاد،راجہ نجابت کا عظیم کارنامہ: راجہ آفتاب شریف
اولڈہم:برطانوی پارلیمنٹ میں ہونے والی قومی کشمیر کانفرنس کا انعقاد جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کے چیئرمین کا کشمیری قوم کیلئے ایک عظیم کارنامہ ہے اور اب تحریک آزادی کشمیر تاریخ کے ایک نئے موڑ میں داخل ہو چکی ہے،موجودہ سرگرمیوں کے باعث بھارتی سرکار کی نیندیں حرام ہو چکی ہیں کیونکہ اس سے پہلے بھارت کی اینٹیلی جنس ادارے اپنے اثر و رسوخ کا استعمال کر کے کشمیریوں کی آواز دبا دیتے تھے لیکن اب ایسا نہیں کر سکتے دنیا کا نقشہ بدل چکا ہے اور اس کی سب سے بڑی وجہ یہ بھی ہے کہ کشمیری انتہائی منظم اور منصوبہ بندی سے اپنا کیس دنیا کے سامنے پیش کر رہے ہیں،ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ ن برطانیہ کے مرکزی راہنما راجہ آفتاب شریف نے میڈیا سے قومی کشمیر کانفرنس کے حوالہ سے ایک خصوصی گفتگو کے دوران کیا،انہوں نے مزید کہا کہ برطانیہ و یورپ میں بسنے والی شخصیات خلوص نیت اور انتہائی محنت سے مظلوم کشمیریوں اور اپنے پیدائشی حق خود ارادیت کیلئے میدان عمل میں عملاً متحرک ہیں انکا بھرپور ساتھ دینا چاہئے،انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں کے راہنمائوں اورکارکنان کے علاوہ سماجی و کمیونٹی راہنمائوں کو قومی کشمیر کانفرنس میں بھرپور شرکت کرنی چاہئے اور اس سلسلے میں راجہ نجابت حسین کی کاوشیں قابل فخر،تعریف و رشک ہیں،انہوں نے کہا کہ اس تاریخی موقع پر وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان کا اس کانفرنس میں شرکت کرنا انتہائی اہم ہے برطانیہ میں بسنے والے کشمیری اس کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور پر امید ہیں کہ اس کے دوراس اثرات مرتب ہونگے اور بین الاقوامی سطح پر مسئلہ کشمیر کو مزید تقویت ملے گی۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر