مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
جمیل الدین عالی کی پاکستانی ثقافت و زبان کے فروغ کیلئے خدمات مثالی ہیں: سید ابن عباس
لندن:وطن عزیز سے محبت و الفت کے دعویدار تو بہت مل جاتے ہیں لیکن وطن کی الفت کو سرمایہ حیات بنانے والے بہت کم ہوتے ہیں، پاکستان کے نامور شاعر اور کالم نگار جمیل الدین عالی بھی پاکستان کے ایک ایسے سپوت تھے جنکے دل میں وطن کا درد ہمیشہ موجزن رہا۔ جمیل الدین عالی ایک عظیم محب وطن تھے اور پاکستانی ثقافت اور اردو زبان کے فروغ کے لئے ان کی خدمات بے مثال ہیں۔ ان خیالات کا اظہار پاکستانی ہائی کمشنر سید ابن عباس نے نامور شاعر کے اعزاز میں منعقدہ ایک نشست میں کیا۔انہوں نے کہا کہ عالی صاحب کی ایک اہم ترین خوبی یہ تھی کہ انہوں نے اپنے دور کے ساتھ اپنا تعلق برقرار رکھا اور بدلتے وقت کے ساتھ خود کو ڈھالتے رہے۔ وہ پاکستان کی عظمت پر غیرمتزلزل یقین رکھتے تھے اور کئی لوگوں کے لئے رہنمائی کا کام دیتے تھے۔ معروف پاکستانی شاعر اور ادیب جمیل الدین عالی (مرحوم) کی یاد میں یہ تقریب پاکستان ہائی کمیشن لندن میں منعقد کی گئی۔ اس عظیم شاعر کی زندگی اور خدمات کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے اس ادبی شام کا اہتمام ہائی کمیشن اور اردو مرکز لندن نے مشترکہ طور پر کیاتھا۔ برطانیہ میں پاکستان کے ہائی کمشنر سید ابن عباس نے تقریب کی صدارت کی۔ اس موقع پر ’’خواب کا سفر‘‘ کے عنوان سے ایک دستاویزی فلم دکھائی گئی جسے عالی صاحب کے سو سے زائد مداحوں نے بھرپور انداز میں سراہا۔ اس دستاویزی فلم میں جمیل الدین عالی کی زندگی کا سفر ان کے معاصرین کے مختصر تاثرات اور انٹرویوز کے ساتھ بیان کیا گیا ہے۔اس میں ایک عالم، شاعر اور سچے محب وطن کی حیثیت سے ان کی شخصیت کے نمایاں پہلوئوں کو اجاگر کیا گیا ہے۔جمیل الدین عالی کے بیٹے ذوالقرنین علی نے بھی اس موقع پر اظہار خیال کیا اور شرکاء کو اس دستاویزی فلم کے بارے میں آگاہ کیا۔ انہوں نے اپنے والد کی زندگی کے مختلف پہلوئوں پر روشنی ڈالی۔ چیئرمین اردو مرکز لندن ڈاکٹر جاوید شیخ، پروفیسر محمود فاروقی اور عقیل دانش نے جمیل الدین عالی کی زندگی اور خدمات پر اپنے مختصر مقالے پیش کئے۔ مقامی گلوکار آصف رضا نے اس موقع پر عالی صاحب کے چند ملی نغمے پیش کئے۔ ڈپٹی ہائی کمشنر ڈاکٹر اسرار حسین نے تقریب کی میزبانی کے فرائض انجام دئیے۔