مقبول خبریں
یورپین اسلامک سینٹر کے منتظم اعلیٰ سکالر مولانا محمد اقبال کے والد محترم کی وفات پر اظہار تعزیت
صدرریاست آزاد جموں و کشمیر سردار مسعود خان کا برطانوی پارلیمنٹ کا دورہ
پاک برٹش انٹر نیشنل ٹرسٹ کے چیئرمین چوہدری سرفراز کی جانب سے عشائیہ کی تقریب
میاں صاحب نظریے کو سمجھتے نہیں، وقت کے ساتھ مؤقف بدلنا نظریہ نہیں ہوتا:بلاول
مقبوضہ کشمیر :بھارتی فوج کے ہاتھوں ایک اور نوجوان شہید،مظاہرے،جھڑپیں
لوٹن ٹائون ہال میں ادبی بیٹھک، لارڈ قربان نے صدارت کی معروف شعرا کرام کی شرکت
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
پاکستان کی سیاسی صورتحال، یورپین یونین جمہوریت کے ساتھ کھڑی ہے : ڈاکٹر سجاد کریم
مودی کی سبکی
پکچرگیلری
Advertisement
چوہدری پرویز کاوزیر حکومت آزاد کشمیر چوہدری محمد سعید کے اعزاز میں استقبالیہ
ووکنگ،سرے:دس جنوری بروز منگل مصطفیٰ ہومزکے مینجنگ ڈائریکٹر چوہدری پرویز نے وزیر حکومت آزاد کشمیر چوہدری محمد سعید کے اعزاز میں اوون ہائوس ووکنگ،سرے میں ایک استقبالیے کا اہتمام کر رکھا تھا جس میں ہر مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والوں کی ایک کثیر تعداد نے شرکت کی،تقریب کا باقاعدہ آغاز امام شاہجہان مسجد ووکنگ حافظ محمد سعید ہاشمی کی تلاوت قرآن پاک سے ہوا،کونسلر راجہ محمد الیاس ایڈووکیٹ نے پروگرام کی نظامت کے فرائض نبھاتے ہوئے مہمان خصوصی کو اہلیان ووکنگ کی جانب سے خوش آمدید کہتے ہوئے عہدہ وزارت سنبھالے جانے پر مبارک باد پیش کی،چونکہ وزیر موصوف نے اسی روز بعد دوپہر2بجے دن لندن میں مقبوضہ کشمیر میں ہیومن رائٹس و ایولیشن کے حوالے سے ترتیب دی گئی ایک احتجاجی ریلی کی بھی قیادت کرنی تھی اور پارلیمنٹ ہائوس میں بھی انکا خطاب تھا اس لئے روایتی سلسلہ تقاریر کو مختصر کرتے ہوئے صرف مہمان خصوصی کے خطاب پر ہی اکتفا کیا گیا،انہیں سٹیج پر دعوت خطاب دینے سے پہلے سٹیج سیکرٹری نے بیرون ملک مقیم لوگوں کے چیدہ چیدہ مسائل جو ایئر پورٹ سے شروع ہو کر وطن عزیز میں قیام کے دوران جن میں تارکین وطن کے ساتھ ائر پورٹس سے لیکر قیام وطن تک ہر موقع پر ناروا سلوک ان کے پلاٹوں کی ڈبل الاٹمنٹ،جعلی دستاویزات کے ذریعے ان کی جائیدادوں کی خرید و فروخت اور قبضے،رشوت،سفارش اقربا پروری اور لا قانونیت جس کی کوئی پرسان حال نہیں ہے جیسے مسائل سے مایوس ہو کر واپس آتے ہیں،کونسلر راجہ محمد الیاس نے وزیر موصوف سے کہا کہ آپ کو صرف ایک مثال سے اندازہ ہو جائے گا کہ ایک کرپٹ سوسائٹی اور مہذب معاشرے میں کام کے طریقہ کار میں کتنا فرق ہے1996میں یہاں ووکنگ میں working Hospiceکا کام شروع ہوا تو لوکل بارو نے نہ صرف زمین لیکر دی بلکہ حتی المقدر مالی معاونت بھی کی اور ان بیس سالوں میں working Hospiceکی بڑھتی ہوئی ضروریات کے پیش نظر اب ایک اور وسیع قطع اراضی الاٹ کیا جس پر کام اب تکمیل کے آخری مراحل میںہے انہوں نے ووکنگ میں آباد مسلم کمیونٹی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ابھی گزشتہ ماہ ان لوگوں نے ایک شام کو صرف تین گھنٹے کے فنڈریزنگ ڈنر میں ایک لاکھ پونڈ جمع کر کے ورکنگ ہاسپس کی انتظامیہ کو دینے جبکہ1996ہی میں میرپور میں الفلاح فائونڈیشن ٹرسٹ کا قیام عمل میں آیا اور تا حال وہ اپنی کلینیکل سروسز کرائے کی ایک بلڈنگ سے مہیا کر رہے ہیں اور متوسط خاندانوں کے ذہین بچوں کو مبلغ دو ہزار روپیہ ماہانہ وظائف دے رہے ہیں مگر کرپشن کی انتہا ہے کہ اس قسم کے کریڈبل اداروں کی بھی حوصلہ افزائی نہیں کی جا رہی وزیر موصوف کو جب دعوت خطاب دی گئی تو انہوں نے میزبان اور اہلیان ووکنگ کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے انتہائی مختصر سے نوٹس پر اس قدر خوبصورت تقریب کا جو اہتمام کیاہے یہ ان کیلئے کسی اعزاز سے کم نہیں ہے پھر انہوں نے اپنی بات کا آغاز ہی الفلاح فائونڈیشن کی اعلیٰ کارکردگی سے کیا اور بتایا کہ میں ان کے کام سے بخوبی واقف ہوں اور مجھے علم ہے کہ وہ میرپور کے اندر غریب،نادار،بیوائوں،یتیموں اور بے سہارا لوگوں کی مفت ادویات کی فراہمی کا اہتمام کر رہے ہیں سابق سیکرٹری ایجوکیشن چوہدری محمدیوسف اور سابق پرنسپل گورنمنٹ ڈگری کالج میرپور عبدالواحد قریشی ماہرین تعلیم ہونے کے ساتھ ساتھ دیانتداری میں بھی اپنا ایک خاص مقام رکھتے ہیں انہوں نے الفلاح فائونڈیشن کے پلیٹ فارم سے غریب و نادار لوگوں کی کسی طرح مدد فرماتے رہے اور اس صدقہ جاریہ ہی تعاون کندگان کا شکریہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ واپس جا کر اسی ادارے کے حصول اراضی کے سلسلے میں ہر ممکن تعاون کریں گے اور کہا کہ جس طرح کچھ دیگر تنظیموں کو جگہ مہیا کی گئی ہے اسی طرح انہیں بھی اکاموڈیٹ کیا جائے گا،انہوں نے کہا میرا برطانیہ بھی آنا جانا رہتاہے اور میں میرپور کا شہری ہونے کے ناطے سے بہت سے مسائل سے از خود با خبر ہوں ہماری حکومت کی پہلی ترجیح مسئلہ کشمیر کے مستقبل حل کی کوششیں ہیں اور دوسری گڈ گورنس اور عام لوگوں کی فلاح و بہبود کے کام ہیں انہوں نے بڑے وثوق سے اس بات کا اظہار کیا کہ ہمیں تھوڑا موقع دیں تو آپ انشااللہ ایک بہتر تبدیلی محسوس کریں گے انہوں نے کہا کہ الیکشن کی حد تک پارٹی پالیٹکس ہوتی ہے اور جب کوئی منتخب ہو جاتا ہے تو پھر وہ پورے حلقے کا نمائندہ ہوتا ہے اور یہ بڑی تنگ نظری اور کم ظرفی کی بات ہوتی ہے کہ پھر کوئی سوچے کہ مجھے کسی نے ووٹ دیا ہے اور کسی نے نہیں دیا اور اسی طرح وزارت کا قلمدان سنبھالنے کے بعد پورا آزاد کشمیر اس کا حلقہ ہوتا ہے اور میرے متعلق آپ یہ نہیں سنیں گے کہ چوہدری سعید نے کوئی امتیازی بات یا تفریق کی ہے انہوں نے حاضرین محفل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جب بھی میری ضرورت پڑے آپ براہ راست مجھ سے رابطہ کر سکتے ہیں مجھے فون کر سکتے ہیں وہاں آئیں تو مجھے مل سکتے ہیں میں انشااللہ آپ لوگوں کی جائز مدد کیلئے ہمہ وقت مصروف کار رہوں گا انہوں نے اپنی گفتگو کے دوران لوگوں کو درپیش مسائل کا ازخود تذکرہ کر دیا تاہم ان کے اختتام گفتگو پر غیر رسمی انداز میں کونسلر طاہر عزیز سلہریا سابق کونسلرچوہدری بشیر،چوہدری ذوالفقار،حاجی افسر،چوہدری معظم اور دیگر لوگوں نے اظہار خیال کرتے ہوئے شہریوں کے لئے پینے کے صاف پانی کی شدید قلت،سڑکوں کی نا گفتہ حالت،دفاتر میں لوگوں کیلئے دانستہ دشواریاں پیدا کرنے اور وقت ضائع کئے جانے کے رجحانات کی طرف توجہ مبذول کروائی جس پر وزیر نے ہر ممکنہ طور پر حالات کو بہتر بنائے جانے کی یقین دہانی کرائی، پروگرام کے آخر میں میزبان چوہدری پرویز نے تمام حاضرین کی تواضع کا معقول اہتمام کروا رکھا تھا انہوں نے حاضرین اور مہمان خصوصی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے حسب روایت پھول کا خوبصورت گلدستہ پیش کر کے رخصت کیا،اس طرح مہمان خصوصی وزیر حکومت آزاد کشمیر چوہدری محمد سعید کا یہ مختصر مگر یادگار دورہ ووکنگ اپنے اختتام کو پہنچا۔