مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
علما کرام لوگوں کو اختلافی مسائل میں الجھانے کے بجائے قرآن و حدیث کا علم دیں:صاحبزادہ حسیب
مانچسٹر ... انٹرنیشنل نعت ایسوسی ایشن کے چیئرمین اور سینئر امام مرکزی جامع مسجد وکٹوریہ پارک علامہ قاری جاوید اختر چشتی کی طرف سے دئے گئے عشائیہ میں اظہار خیال کرتے ہوئے سجادہ نشین عیدگاہ شریف راولپنڈی صاحبزادہ حسیب الرحمن نقیبی نے کہا ہے کہ برطانیہ میں نوجوان نسل کا رحجان بے راہ روی کی طرف بڑھ رہا ہے اور نوجوان لڑکیوں میں اپنے گھر بسانے کے بجائے نام نہاد آزادی کا رحجان بڑھتا جارہا ہے اور حفظ مراتب اور رشتوں کی قدریں ختم ہورہی ہیں اس کے لئے لوگوں کو اختلافی مسائل میں الجھانے کے بجائے انہیں قرآن و حدیث کے مطابق رشتہ داروں کے آداب کا لحاظ اور حقوق کی پاسداری کے بارے میں آگاہ کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ان کے اس دورہ برطانیہ امریکہ میں نوجوانوں کی بہت بڑی تعداد کی اصلاح احوال ہوئی ہے۔ یہاں پروان چڑھنے والی نسلیں علمائے حقہ کی رہنمائی کی طلبگار ہیں انہیں نوجوانوں کو اخلاق اور محبت مصطفٰی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی تربیت اور آگاہی کے لئے خود کو وقف کرنا چاہیئے۔ اس موقع پر علامہ قاری جاوید اختر نے کہا کہ وہ برطانیہ میں گزشتہ 28برس سے دینی خدمات سرانجام دے رہے ہیں اور انٹرنیشنل نعت ایسوسی ایشن کے پلیٹ فارم سے ہزاروں نوجوانوں میں حب مصطفٰیٰ سرور کونین صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف رغبت پیدا ہوئی۔ اس موقع پر علامہ شاہجہان مدنی، علامہ قاری نور محمد نوری نقشبندی، استاد محمد صفدر چشتی المدنی، چوہدری اعجاز احمد ، جی ایم مغل کے علاوہ بڑی تعداد میں نعت خوانوں اور قراء حضرات نے شرکت کی۔