مقبول خبریں
عبدالباسط ملک کے والدحاجی محمد بشیر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعائیہ تقریب
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
شامی باغیوں نے سینکڑوں افراد کو ظلم کا نشانہ بنایا، ہیومن رائٹس واچ کی رپورٹ
نیویارک ... عالمی تنظیم برائے انسانی حقوق ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ اگست میں فوجی کارروائیوں کے دوران شام کے باغیوں نے کم از کم 190 شہریوں کو قتل اور دو سو سے زیادہ افراد کو یرغمال بنایا تھا۔ جن میں سے زیادہ تر خواتین اور بچے تھے۔ تنظیم کی جانب سے جاری کردہ ایک رپورٹ کے مطابق ہلاک شدگان کا تعلق زیادہ تر علوی مسلم فرقے سے تھا۔ رپورٹ کے مطابق یہ شہری قتل عام صوبے لاذقیہ کے علوی اکثریتی آبادی والے قریب دس دیہات میں کیا گیا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ تفتیش سے یہ واضح طور پر پتہ چلتا ہے کہ یہ انسانیت کے خلاف جرم ہے۔ واضح رہے کہ شام میں دو سال سے جاری بغاوت کے دوران باغیوں اور فوجیوں پر انسانیت کے خلاف جرائم کا الزام لگایا جاتا رہا ہے۔ ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ انھوں نے جائے وقوعہ پر جانچ کی اور 35 سے زیادہ افراد کا انٹرویو لیا۔ ان میں طرفین کے جنگجو بھی شامل تھے جو اس آپریشن میں زندہ بچ گئے تھے۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ کس طرح باغیوں نے عام شہریوں کو قتل کیا اور ان پر گولیاں چلائیں۔ بعض اوقات پورے کے پورے کنبے کو مارنے کی کوشش کی گئی۔ ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ اس حملے میں باغیوں کے تقریباً 20 گروہوں نے حصہ لیا تھا جن میں سے پانچ شہریوں پر حملہ کرنے میں شامل تھے اور یہ پانچوں گروپ آزاد شامی فوج کا حصہ نہیں ہیں۔ رپورٹ میں کہا گيا ہے کہ دو گروپ عراق و شام کی اسلامی مملکت اور جیش المہاجرین والانصار نے ابھی تک لوگوں کو یرغمال بنا رکھا ہے جن میں عورتیں اور بچے شامل ہیں۔