مقبول خبریں
پاکستان میں صاف پانی کی سہولت کو ممکن بنانے کیلئے مختلف منصوبوں پر کام کرونگی:زارہ دین
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
امن کا نوبل انعام کیمیائی ہتھیاروں کے خاتمے کیلئے کام کرنے والی تنظیم کے نام ..!!
اوسلو ... نوبل امن ایوارڈ کے منتظر کروڑوں لوگوں کی بے چینی بالآخر ختم ہوئی امن کےلیئے کام کرنے والی عالمی تنظیم "آرگنایزیشن فار دی پروٹیکشن آف کیمیکل ویپنز " کو 2013 کے امن کے نوبل انعام کا حقدار قرار دیا گیا۔ عالمی میڈیا کا ایک حصہ جس میں اکثریت پاکستانی میڈیا کی تھی اس فیصلے سے مایوس نظر آیا کیونکہ وہ پہلے سے تصور کر چکے تھے کہ اس سال یہ انعام ملالہ یوسف زئی کو ہی ملے گا۔ جبکہ یہ انعام شام میں ہتھیاروں کو تلف کرنے میں مصروف انسدادِ کیمیائی ہتھیاروں کی تنظیم کو دیا گیا ہے۔ اس سال نوبیل امن انعام کے لیے ریکارڈ 259 افراد کو نامزد کیا گیا تھا جن کے ناموں کو صیغۂ راز میں رکھا گیا ہے لیکن عالمی سٹے بازوں کے نزدیک بھی ملالہ کو انعام ملنے کا امکان سب سے زیادہ تھا۔ باضابطہ طور پر نوبیل انعام کے لیے نامزد افراد کی فہرست 50 سال تک منظرِ عام پر نہیں لائی جاتی۔ تاہم نامزدگی کرنے والے افراد اپنی مرضی سے اپنے امیدوار کا نام ظاہر کر سکتے ہیں۔ انعام کے متوقع جیتنے والوں میں جمہوریہ کانگو سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر ڈینس میوکیوجی اور وکی لیکس کو خفیہ دستاویزات فراہم کرنے والے سابق امریکی چیلسی میننگ کو بھی اس انعام کے لیے متوقع طور پر نامزد امیداروں کی فہرست میں شامل کیا گیا تھا۔ منظر عام پر آنے والے دیگر امیدواروں میں روس کے صدر ولادیمیر پوتن، یو ٹو میوزک بینڈ کے گلوکار بونو اور وکی لیکس کے بانی جولین اسانج بھی شامل تھے۔ دیگر امیدواروں میں وہ مصری کمپیوٹر سائنسدان بھی شامل تھے جو تعلیم چھوڑ کر عیسائی راہبہ بن گئی اور خیراتی ادارے سٹیفنز چلڈرن کی اور ایک امیدوار روس سے تعلق رکھنے والے ریاضی کی سابق استاد سوینٹلانہ گاننوشینکا تھے جنھوں نے انسانی حقوق کی تنظیم سول اسسٹنس کی بنیاد ڈالی۔ نوبل انعام ڈاکٹر الفرڈ نوبل کی وصیت کے مطابق ان کی عالمی سرمایہ کاری میں لگائی گئی دولت سے فزکس، کیمسٹری اور میڈیسن کے شعبہ جات میں نئی ایجادات اور تخلیقات پیش کرنے والوں کو دیا جاتا ہے جسکی مالیت ملین ڈالرز میں ہوتی ہے۔ جبکہ چوتھا شعبہ ادب کا ہے اور پانچویں نمبر پر امن کا نوبل انعام ہے جسکی اس سال انعامی مالیے ساڑھے بارہ لاکھ ڈالرز تھی۔ امسال انعام حاصل کرنے والی تنظیم او پی سی ڈبلیو کا بیڈ کوارٹر ہیگ میں ہے اور اس نے انسانیت کو کیمیائی ہتھیاروں سے بچانے کے کام کا آغاز ١٩٩٧ سے کیا تھا۔