مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
حکمرانوں کی مجبوریاں ہو سکتی ہیں لیکن کشمیری تارکین وطن ہی اصل سفیر ہیں: فدا حسین کیانی
مانچسٹر ... برطانیہ میں آباد کشمیریوں کا تحریک آزادی کشمیر میں ایک مثالی کردار ہے جسے ریاست کے دونوں اطراف کے کشمیری عوام قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ پاکستانی اور کشمیری تارکین وطن اتحاد و یکجہتی سے برطانیہ اور یورپ کے ایوانوں میں مقبوضہ کشمیر کے حریت پسند عوام کی موثر آواز بن کرکام کریں۔ان خیالات کا اظہار آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما اور وزیر اعظم آزاد کشمیر کے سابق مشیر سیاسی امو ر فدا حسین کیانی نے یہاں مانچسٹر میں جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت یورپ کے چئیرمین راجہ نجابت حسین کی طرف سے اپنے اعزاز میں دئیے گئے عشائیہ کے موقع پر کیا۔اس تقریب کی صدارت روحانی بزرگ اور جسٹس فار جموں وکشمیرکے سیکرٹری جنرل علامہ عظیم جی نے کی۔جبکہ تقریب میں یورپین پارلیمنٹ کے لےئے نارتھ ویسٹ سے لیبر پارٹی کے امیدوار ، سابق لارڈ مئیر مانچسٹرکونسلر راجہ افضل خان، لارڈ مئیر مانچسٹر کونسلرنعیم الحسن،تحریک حق خودارادیت شعبہ خواتین نارتھ ویسٹ کی چئیرپرسن فلک خان،یاسمین ڈار،بیرسٹر شازیہ انجم،شبانہ جمال،سابق کونسلر مہربان حسین،حاجی محمد نجیب،محمد امجد مغل ،سعدیہ محمودنے بھی شرکت کی اور اپنے خیالات کا اظہار کیا۔تقریب کے مہمان خصوصی فدا حسین کیانی نے کہا کہ ریاست جموں وکشمیر کی تحریک آزادی میں مقبوضہ جموں وکشمیر کے بعد سب سے زیادہ اہم کردار تارکین وطن کشمیریوں اور پاکستانیوں کا ہے جن کے ساتھ اہل وطن کی بڑی امیدیں وابستہ ہیں۔پاکستان اور آزاد کشمیر کے حکمرانوں کی مجبوریاں ہو سکتی ہیں لیکن دنیا بھر میں پھیلے ہوئے کشمیری مسئلہ کشمیر کے بنیادی سفیر کی حیثیت رکھتے ہیں جن کی کوششوں اور جدو جہد سے سفارتی سطح پر تحریک آزادی کشمیر کو بھرپور تقویت مل سکتی ہے۔فدا کیانی نے راجہ نجابت حسین اور اُن کی ٹیم کو خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ راجہ نجابت حسین گزشتہ چالیس سالوں سے دیار غیر میں مسلم کانفرنس کے نظریات اور تحریک آزاد کشمیر کو اپنی زندگی کا محور و مرکزبنا کر جدو جہد کر رہے ہیں،برطانیہ اور یورپ میں اُن کی کوششیں ضرور کامیاب ہوں گی او ر اُن سے مسئلہ کشمیر پر عالمی اور سفارتی سطح پر تفہیم میں مدد ملے گی۔ فدا کیانی نے تقریب میں موجود خواتین رہنماؤں کی مسئلہ کشمیر میں دلچسپی اور معاونت کو تحریک آزادی کشمیر کے لئے ایک سنگ میل قرار دیا ۔ فدا کیانی نے مانچسٹر کے سابق لارڈ مئیر کونسلر افضل خان کو یورپین پارلیمنٹ کا ٹکٹ ملنے پر مبارک باد دی اور کہا کہ جس طرح وہ ماضی میں مسئلہ کشمیر کو مقامی سیاست دانوں تک پہچانے میں معاونت کرتے رہے ہیں توقع ہے کہ وہ ستائس(27) ممالک کی نمائندہ یورپین پارلیمنٹ میں منتخب ہو کر مقبوضہ کشمیر کے حریت پسند عوام کی موثر آواز بنیں گے۔تحریک حق خودارادیت یورپ کے چئیرمین اور تقریب کے میزبان راجہ نجابت حسین نے کہا کہ وہ اپنے دیرینہ دوست اور ساتھی فدا کیانی کی عمر بھر کی سیاست کو بہت قریب سے جانتے ہیں ان جیسے سیاسی کارکنوں کی موجودگی سیاسی جماعتوں کا اصل اثاثہ ہوتی ہے،توقع ہے کہ مسلم کانفرنس کی قیادت ان کی صلاحیتوں سے مستقبل میں بھی استفادہ حاصل کرتی رہے گی۔راجہ نجابت حسین نے تحریک اور اس کے اراکین کی سرگرمیوں سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم آزاد کشمیر اور پاکستان کے قومی ایام پر برطانیہ اور یورپ میں تقریبات منعقد کرنے کے ساتھ ساتھ برطانوی سیاسی جماعتوں سے بھی مسلسل رابطے میں ہیں جس کی وجہ سے یہاں کے متعدد ممبران پارلیمنٹ اور اہم سیاسی رہنماکشمیریوں کے بنیادی حق خودارادیت کی حمایت کرتے ہیں،انہوں نے کہا کہ ہم اپنی جدو جہد اُس وقت تک جاری رکھیں گے جب تک کشمیری عوام اپنے حق خودارادیت کو حاصل نہیں کر لیتے۔یورپین پارلیمنٹ کے لئے نارتھ ویسٹ سے امیدوار کونسلر افضل خان نے کہا کہ وہ بحیثیت کونسلربھی کشمیریوں کی معاونت کرتے رہے ہیں۔اور اب ایک بڑے ایوان میں جا کرمسئلہ کشمیر کو اُس کے حقیقی تناظر میں یورپین ایوان تک پہنچائیں گے۔انہوں نے کہا کہ لیبر پارٹی کی حالیہ کانفرنس میں اپنی پارٹی کی یورپین پارلیمنٹ میں گروپ لیڈر گلسن ویلموٹ سے ملکر سوشلسٹ گروپ کو بھی کشمیریوں کا ہمنوا بنانے کیلئے لائحہ عمل طے کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ بہت جلد یورپی ممالک کے دیگر سوشلسٹ ممبران سے ملاقاتیں کر کے تحریک حق خودارادیت کو بھرپور معاونت فراہم کریں گے۔ کونسلر افضل خان نے27؍ اکتوبر کو مانچسٹر ٹاؤن حال میں یوم سیاہ کے حوالے سے منعقد ہونے والی تقریب سے بھی تحریک کے اراکین کو آگاہ کیا۔ جسٹس فار جموں وکشمیرکے سیکرٹری جنرل مولانا عظیم جی نے فدا حسین کیانی کی مسلم کانفرنس اور کشمیری سیاست میں عرصہ دراز سے وابستگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ فدا کیانی ایک نظریاتی کارکن ہیں جن کی ساری زندگی نظریے اور عقیدے کے ساتھ وابستہ ہے۔ علامہ عظیم جی نے کہا کہ بے شک میرا تعلق پاکستان کے صوبہ سندھ سے ہے لیکن کشمیریوں اور اُن کی جدو جہد آزادی کے ساتھ میری وابستگی ہمیشہ مضبوط اور اولین ترجیح رہی ہے اور وہ تحریک حق خودارادیت سے مل کر کشمیریوں کے بنیادی حق خودارادیت کے حصول کیلئے اپنی تمام صلاحیتیں بروئے کار لاتے رہیں گے۔تحریک حق خودارادیت کی خاتون رہنما اور یوم سیاہ کے پروگرام کی انچارج کونسلر یاسمین ڈار نے نارتھ ویسٹ میں کشمیری و اپسکاتنی خواتین کی مسئلہ کشمیر کے حوالے سے سرگرمیوں سے آگاہ کیا اور کہا کہ ہم مقبوضہ کشمیر کی مظلوم خواتین کی آواز کو دنیا کے ہر فورم میں پہچانے کیلئے تحریک حق خودارادیت کے پلیٹ فارم سے اپنا بھرپو ر کردار ادا کریں گی۔انہوں نے تحریک حق خودارادیت میں خواتین کو لیڈر شپ کردار دینے پر تحریک کی قیادت سردار عبد الرحمان اور راجہ نجابت حسین کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ برطانیہ میں متحرک کشمیر و پاکستانی خواتین تحریک حق خودارادیت کا ہراول دستہ بن کر مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کیلئے اپنا کردار اد اکریں گی۔مانچسٹر کے لارڈ مئیر کونسلر نعیم الحسن نے کہا کہ وہ ماضی کی طرح اب بھی راجہ نجابت حسین اور کونسلر افضل خان کے ساتھ مل کر کشمیریوں کی جدو جہد آزادی کو اجاگر کرنے کیلئے اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے اور اس حوالے سے منعقد ہونے والی تقریبات سے مکمل تعاون کریں گے۔ لارڈ مئیر کونسلر نعیم الحسن نے سابق مشیر آزاد کشمیر اور مسلم کانفرنسی رہنما فدا کیانی کو مانچسٹر آمد پر خوش آمدید کہا ۔ لارڈ مئیر نے تحریک حق خودارادیت کی مثبت سرگرمیوں اور خاص طور پر ان میں خواتین کی بھرپو رشمولیت پرمبارک باد پیش کی ۔ نارتھ ویسٹ میں تحریک حق خودارادیت کی چیئرپرسن فلک خان نے کہا کہ گزشتہ ایک سال کے دوران نارتھ آف انگلینڈ میں برطانوی سیاست دانوں تک کشمیری خواتین کی آواز کو پہنچا کر ہم انہیں کشمیریوں کی جدو جہد آزادی سے روسناش کرایا ہے ۔ تحریک حق خودارادیت نے 27؍اکتوبر کو یوم سیاہ کے حوالے سے برطانیہ اور یورپ میں تقریبات منعقد کرنے کا اعلان کیا جس میں مسئلہ کشمیر کو اجاگر کیا جائے گا اور عالمی طاقتوں کی توجہ ہندوستانی مظالم اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی طر ف مبذول کرائی جائے گی۔