مقبول خبریں
بین الاقوامی میڈیا نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت کی کلی کھول دی ہے:سردار مسعود خان
ڈیبی ابراھم کی قیادت میں ممبران پارلیمنٹ اور کمیونٹی رہنماؤں کی لارڈ طارق احمد سے ملاقات
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کی وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور شاہ غلام قادر سے ملاقات
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
9ستمبر کو اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے باہر بھرپور مظاہرہ کرینگے:راجہ نجابت حسین
سوچنے کے موسم میں سوچنا ضروری ہے!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
کشمیریوں کا ایک ہی مطالبہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق رائے شماری ہے: راجہ ظفرمعروف
گلاسگو... آزاد جموں کشمیر مسلم کانفرنس کے نائب صدر اور میرپور کے سابق ایڈمنسٹریٹر راجہ ظفر معروف نے کہا ہے کہ جب تک مسئلہ کشمیر کو حق وانصاف کے اصولوں کے مطابق حل نہیں کیا جاتا، برصغیر میں پائیدار امن کا قیام ناممکن ہے۔ گلاسگو میں بیلی کونسلر حنیف راجہ کی طرف سے ا پنے اعزاز میں دیے گئے ایک عشائیے سے خطاب کرتے ہوئے راجہ ظفرمعروف نے کہا کہ یہ مسئلہ کشمیر ہی ہے جس کے باعث پاکستان اور بھارت کے درمیان ماضی میں تین جنگیں ہوچکی ہیں اور دونوں ممالک کے کھربوں روپے اسلحے پر خرچ ہورہے ہیں،بھارتی افواج کشمیر میں طاقت اور طلم وستم کے تمام ہتھکنڈے ازما چکی ہیں، ایک لاکھ سے زیادہ افراد کو شہید اور بے شمار عورتوں کی عصمت دری کی جاچکی ہے لیکن کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو سردنہیں کیاجاسکا۔ کشمیری عوام کا ایک ہی مطالبہ ہے کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق رائے شماری کرادی جائے۔ بھارت کا دعوے ہے کہ کشمیری عوام اس کے ساتھ ہیں تو پھر اسے اس مطالبے پر عملدرآمد کرانے میں ہرگز کوئی پس وپیش نہیں کرنا چاہیے ، راجہ ظفر معروف نے اقوام متحدہ سے کہا کہ کشمیری عوام آزادی اور حق خود ارادیت کی جنگ لڑرہے ہیں لہٰذا ان کی اس جدوجہد کو قبول کرتے ہوئے کشمیر کو یو این او میں ایک مبصر ریاست کا درجہ دیاجائے، بیلی کونسلر حنیف راجہ نے دنیا کی تمام انصاف پسند قوتوں سے اپیل کی کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر توجہ دیں، جہاں لاکھوں کی تعداد میں تعینات قابض فوجی کشمیری عوام سے بنیادی حقوق سلب کئے ہوئے ہیں۔