مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
تارکین وطن کو مکمل تحفظ ملے تو زرمبادلہ کا حجم دوگنا ہو سکتا ہے: گورنر پنجاب محمد سرور
برمنگھم ...گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا ہے کہ تارکین وطن کے دل ہمیشہ اپنے ہم وطنوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔ ملک میں جب بھی کبھی کوئی قدرتی آفت آئی۔ تارکین وطن نے بڑھ چڑھ کر اپنے بھائیوں کی خدمت کی۔ میں بھی یہی خدمت کا جذبہ لے کر برطانیہ کی نیشنلٹی ترک کرکے پاکستان کی خدمت کیلئے گیا اور آج بفضل تعالیٰ آپ کی دعاؤں سے گورنر پنجاب ہوں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم لیگ ن کے راجہ جاوید اقبال کی طرف سے دئیے گئے استقبالیہ میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ تارکین وطن ہر سال 15 بلین زرمبادلہ بھیجتے ہیں۔ میں سمجھتا ہوں کہ اگر ہم تارکین وطن کو مکمل تحفظ دیں تو ملک میں مکمل لاء اینڈ آرڈر کا نفاذ یقینی بنائیں تو مجھے یقین ہے کہ صرف ایک برس کے اندر یہ زرمبادلہ ڈبل کرسکتے ہیں۔ معاشرے میں اور بالخصوص بیورو کریسی میں ایک بے حسی پائی جاتی ہے۔عام پاکستانی ایماندار ہے۔ وطن کا جذبہ ہے۔ کچھ کرنا چاہتے ہیں۔ صرف وسائل کی کمی ہے۔ پاکستان کا جاگیردار کرپٹ ہے، وڈیرہ کرپٹ ہے، نظام کرپٹ ہے، میڈیا کے اس دور میں ہم بہتری کی جانب جا رہے ہیں۔ گزشتہ عید پر ہم نے گورنر ہاؤس کے دروازے عام آدمی کیلئے کھول دیئے گئے تھے۔ غریب نادار یتیم بچوں کے ساتھ ہم نے عید منائی تھی۔ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کا برمنگھم آمد پر پُر جوش استقبال کیا گیا۔ جلسہ میں برمنگھم کی سیاسی سماجی کاروباری شخصیات اور عوام نے بھرپور شرکت کی۔ جن میں مسلم لیگ ن کے صدر زبیر گل، نائب صدر ناصر بٹ، گلاسگو سے کونسلر راجہ محمد حنیف، معروف صحافی طاہر انعام شیخ، پیپلزپارٹی کے اوورسیز سیکرٹری خواجہ شفیق، ممتاز مذہبی سکالر مولانا بوستان قادری، ارشاد اعوان، کونسلر راجہ شوکت، ممبر آف پارلیمنٹ مرزا خالد محمود، سابق لارڈ میئر برمنگھم خواجہ محمد حسین، کونسلر چوہدری محمد افضل، قونصلیٹ جنرل برمنگھم شیر بہادر خان، قونصلر فیصل آبرو، چوہدری منظور، راجہ امجد، تصور حسین نقوی اور دیگر کثیر تعداد میں عوام نے شرکت کی۔ سینئر صحافی ملک عباس نے صحافیوں کی نمائندگی کی۔ باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک کی سعادت پیر طیب الرحمن نے حاصل کی۔ شان کشمیر محمد بوٹا شیدائی نے ہدیہ نعت پیش کیا۔ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے تارکین وطن کے مسائل پر مزید بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تارکین وطن کی زمینوں، پلاٹوں، مکانوں کے مسائل ہیں۔ قبضہ مافیا، بھتہ مافیا، لا اینڈ آرڈر جیسے مسائل سے دوچار ہیں۔ لوگ جب ملک جاتے تو ان کے پلاٹ اور مکان فروخت ہو چکے ہوتے۔ لوگ کورٹس کی تاریخوں سے تنگ آکر واپس آجاتے۔ ہماری کوشش ہوگی اور وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف سے اپیل کریں گے کہ سپیڈی کورٹس قائم کئے جائیں۔ یا موجودہ عدالتوں کو مزید سہولتیں دی جائیں۔ فیصلہ تین تاریخوں کے اندر کیا جائے۔ ممبر آف پارلیمنٹ مرزا خالد محمود نے کہا کہ چوہدری محمد سرور ایک جہد مسلسل کا نام ہے۔ کاروبار میں گئے تو بڑا نام پیدا کیا۔ پھر برطانیہ کی سیاست میں گئے تو پہلا مسلم ممبر آف پارلیمنٹ ہونے کا اعزاز حاصل کیا۔ اور پھر تو جیسے دروازے ہی کھل گئے۔ آج بفضل تعالیٰ ہم آٹھ ممبر آف پارلیمنٹ موجود ہیں۔ مجھے یقین ہے کہ آج جس طرح وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف نے چوہدری محمد سرور پر اعتماد کیا۔ گورنر پنجاب بنایا۔ چوہدری سرور اپنی اعلیٰ صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے پاکستان اور برطانیہ کے درمیان تعلقات کے رشتوں کو اور مضبوط کریں گے۔ تارکین وطن کا اعتماد ان کے ساتھ ہے۔ راجہ جاوید نے برمنگھم قونصلیٹ میں درپیش مسائل اور مشین ریڈایبل پاسپورٹ کے اجرا پر بات کی۔ چوہدری محمد افضل سینئر کونسلر نے اپیل کی کہ سابق حکومت کا جیری انٹرنیشنل کے ساتھ جو معاہدہ کیا گیا۔ ایک ویزہ پر 36 پونڈ فیس بہت بڑی رقم ہے۔ اس کو کم سے کم کیا جائے۔ ایک بڑی فیملی پر بوجھ ہے۔ تارکین وطن کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں دی جائیں تاکہ وطن سے رشتہ برقرار رہ سکے۔ تقریب سے زبیر گل، ناصر بٹ، ایاز راجہ ایڈووکیٹ، خواجہ شفیق، راجہ ظریف اور دیگر نے خطاب کیا۔