مقبول خبریں
آشٹن گروپ کی جانب سے پوٹھواری شعر و شاعری کی محفل،شعرا نے خوب داد وصول کی
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے بھارت سے غیر مشروط مذاکرات کے لئے تیار ہیں:چوہدری نثار
لندن :وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ الطاف حسین کی پاکستان میں تشدد پر اکسانے والی اشتعال انگیز تقاریرپاک برطانیہ تعلقات میں تلخی کی وجہ ہیں ، پاکستان نے برطانوی حکومت سے ان تقاریر کاسنجیدگی سے نوٹس لینے اور اس پر ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ برطانوی حکام خاص طور پر وزیرداخلہ امبر رود کے ساتھ ملاقات کے دوران انہوں نے برطانوی حکام کو اس حوالے سے پاکستان کی تشویش سے پوری طرح آگاہ کردیا ہے، برطانوی وزیراعظم تھریسامے، وزیرخارجہ بورسن جانسن، سابق وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون اور کئی اہم حکام سے ملاقاتوں کے بعد پاکستان ہائی کمیشن میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ الطاف حسین کی نفرت پر مبنی تقاریر پاکستان کے عوام کیلئے باعث تشویش ہیںاور میں نے برطانوی حکام سے ہر ملاقات کے دوران یہ مسئلہ اٹھایا ہے اور انہیں بتایا کہ یہ پاک برطانیہ تعلقات میں تلخی کا بڑا سبب ہے چوہدری نثارنے کہاکہ منی لانڈرنگ کیس جس میں لندن میں ایم کیو ایم کی قیادت ملوث تھی کو جس طرح ہینڈل کیاگیا پاکستان کو اس پر تشویش ہے اوروزیرداخلہ نے انہیں یقین دلایاہے کہ تشدد پر اکسانے کے مسئلے پرتوجہ دی جارہی ہے اور اس کو نجیدگی سے لیا جارہاہے ۔ انہوں نے کہاکہ لندن میں بیٹھ کر کراچی میں تشدد پر اکسانے کے دستاویزی ثبوت موجود ہیں اور یہ تمام ثبوت برطانوی حکومت کو دے دیئے گئے ہیں انہوں نے کہاکہ الطاف حسین نے اپنے ورکرز کو میڈیا ہائوسز پر حملے کا حکم دیا جس کے نتیجے میں 2 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے ، سفاکانہ انداز میں اکسانے کے دستاویزی ثبوت موجود ہیں اس کیلئے اب اور کس چیز کی ضرورت ہے مجھے یقین دلایا گیا ہے کہ پولیس اس معاملے کو دیکھ رہی ہے اور مجھے امیدہیکہ اس پر کارروائی کی جائے گی دی نیوز کے اس سوال پر کہ 6 سال گزر جانے کے باوجود ڈاکٹر فاروق قتل کا اب تک کیوں پتہ نہیں چلایا جاسکاتو چوہدری نثارنے جواب دیا کہ یہ ایک سنگین معاملہ ہے لیکن ایسا معلوم ہوتا ہے کہ برطانوی حکام اس مسئلے کو حل کرنے میں زیادہ سنجیدہ نہیں ہیں میں نے برطانوی حکام کو بتا دیا ہے کہ اس صورتحال کی وجہ سے برطانیہ کے عدالتی نظام کے بارے میں سوال اٹھائے جارہے ہیں، انہوں نے کہاکہ ڈاکٹر عمران فاروق قتل کا کیس ختم ہوچکا تھا اور 2013 ء میں اسے دفن کردیاگیا تھا لیکن میں نے ڈاکٹر عمران فاروق کے قاتلوں اور ان کے سہولت کاروں کو قانون کے کٹہرے لانے کی ہر ممکن کوشش کی، جب ہم نے گرفتاریاں کیں تو برطانوی حکام قتل میں شامل تمام ملزمان کو لینے پر تیار نہیں تھی اور صرف محسن علی سید کو لیناچاہتی تھی ہم نے برطانوی حکومت کواس حوالے سے تمام شواہد دیئے لیکن تفتیش کاروں نے اس پر کوئی توجہ نہیں دی اور چپ سادھ لی ، آخر کار ہمارے سامنے دو ہی راستے رہ گئے تھے یا تو ملزمان کو رہاکردیں یا پاکستان ہی میں ان کے خلاف مقدمہ چلائیں چوہدری نثارنے کہاکہ پاکستان اور برطانیہ کے درمیان مجرموں کے تبادلے کامعاہدہ موجودنہیں ہے لیکن وہ ان کو برطانیہ کے حوالے کرنے کو تیارتھے لیکن ایسا معلوم ہوتا ہے کہ سکاٹ لینڈ کے تفتیش کاروں کو اس مرحلے پر اس معاملہ کو حل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں ہے، چوہدری نثار نے کہاکہ بعض لوگ یہ پراپیگنڈہ کر رہے ہیں کہ اسلام آباد میں کالعدم گروپوں کو ریلی نکالنے کی اجازت دیدی گئی لیکن پی ٹی آئی کے مظاہرین کے خلاف کریک ڈائون کیاگیا، انہوں نے کہاکہ یہ کالعدم گروپوں کااجتماع نہیں تھا ایک مقامی تنظیم نے ریلی کی اجازت مانگی تھی اوراس میں کوئی فرقہ وارانہ تقاریر نہیں کی گئیں اس کے حوالے سے کچھ بھی ثابت نہیں کیا جاسکتا، انہوں نے کہاکہ برٹش پاکستانی بیرسٹر فہد ملک کا قتل ایک افسوسناک واقعہ تھا اور میں نے تمام مجرموں کی گرفتاری کو یقینی بنانے کیلئے تمام ممکن اقدام کئے قتل کے اس واقعے کی تفتیش جاری ہے اور مقتول کی فیملی اس پر مطمئن ہے، جب ان سے سوال کیاگیا کہ کیا با اثر ملزمان سزا کے بغیر انصاف خرید کر رہاہونے میں کامیاب ہوجائیں گے چوہدری نثار نے کہاکہ حقیقت یہ ہے کہ ملزمان جیان میں ہیں اور قاتلوں کی کوئی کوشش کامیاب نہیں ہوسکی ہے جوکہ اس بات کا ثبوت ہے کہ ہر قیمت پر انصاف کیا جائے گا اور فہد ملک کی فیملی کو مایوس نہیں کیاجائے گا۔