مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برٹش نیشنل بیٹی پر تشددکرنیوالے پاکستانی نژادبرطانوی ڈاکٹر گوہر رحمان کو دس ماہ قید
لندن:برطانیہ میں بیٹی کو تشددکا نشانہ بنانے پر پاکستانی ڈاکٹر کو گرفتارکرلیاگیا،57سالہ پاکستانی نژادبرطانوی ڈاکٹر گوہر رحمان نے اپنی 17سالہ بیٹی کو ہالووین پارٹی میں شرکت سے منع کیا لیکن اس نے باپ کی حکم عدولی کرتے ہوئے نہ صرف پارٹی میں شرکت کی بلکہ رات اپنے ایک مرد دوست کے گھر گزاری۔ وہ اپنے باپ کو سہیلی کے گھر جانے کا جھوٹ بول کر نکلی اور کہا کہ رات ساڑھے 9بجے تک واپس آ جائے گی تاہم وہ اگلے روز واپس آئی جس پرباپ نے اسے تشدد کا نشانہ بنایا اور اسے فاحشہ کہہ دیا جس پر نافرمان بیٹی نے پولیس بلا لی اور باپ کو گرفتار کروا دیا۔ عدالت نے گوہر رحمان کو 10ماہ قید کی سزا سنا دی ہے اور اب وہ پروبیشن پر ہیں ۔ انکی بیٹی نے کہا میرا باپ وحشی ہے ۔ اس واقعے کے بعد میں نفسیاتی خلفشار کا شکار ہو چکی ہوں جس سے میری پڑھائی متاثر ہو رہی ہے ۔