مقبول خبریں
پاکستان میں صاف پانی کی سہولت کو ممکن بنانے کیلئے مختلف منصوبوں پر کام کرونگی:زارہ دین
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
کراچی میں رندھاوا قتل کیس کا ملزم سیاسی جماعت کا رکن نکلا، چشم دید گواہ کی تصدیق
کراچی ...کراچی کی ایک عدالت میں قتل کے ایک چشم دید گواہ نے معروف صحافی ولی خاں بابر کیس کی پیروی کرنے والے وکیل مسلم لیگ لائرز فورم کے رحمت علی رندھاوا کے قتل کیس میں گرفتار ملزم کی شناخت کرلی ہے۔ اس ملزم کا تعلق ایک معروف سیاسی جماعت سے ہے اور پولیس پہلے ہی اس پر قتل کے یقین کا اظہار کرچکی ہے۔ کراچی پولیس چیف شاہد حیات نے اس ملزم کا تعلق شہر کی ایک بڑی اہم اور بااثر سیاسی جماعت کے ساتھ ظاہر کیا تھا۔ جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں ملزم اور گواہ کو چہرے ڈھانپ کر پیش کیا گیا تھا۔ واضع رہے کہ اس کیس میں ملوث ہونے والی جماعت نے ہمیشہ اپنے بے گناہ ہونے کا کہا ہے جبکہ آج تک وکیل سمیت سات گواہ ایسی ہی باتیں کرنے کی پاداش میں موت قبول کرچکے ہیں۔ مقتول وکیل رحمت رندھاوا صحافی ولی بابر کے قتل کیس کی پیروی کر رہے تھے، اس واقعے کے بعد کراچی بدامنی کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے حکومت کو گواہوں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے قانون سازی کے احکامات جاری کیے تھے۔ سندھ اسمبلی نے گواہوں کے تحفظ کا قانون بھی منظور کیا تھا، جس کے تحت گواہ عدالتی کارروائی میں ماسک پہن کر اپنی شاخت چھپا سکتا ہے، اس کے علاوہ گواہ کو محفوظ مقام پر رہائش کے علاوہ معاشی معاونت بھی فراہم کی جائےگی۔