مقبول خبریں
جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برطانیہ برانچ کے زیرِ اہتمام فکر مقبول بٹ شہید ورکز یونیٹی کنونشن کا انعقاد
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بھارتی ایوان میں شروع ہوئی تلخ حقائق کی آگ دو روز میں سات کشمیریوں کو نگل گئی !!
سرینگر... بھارتی افواج نے کسی اور بات کا غصہ ہمیشہ کی طرح نہتے کشمیریوں پر اتارتے ہوئے دو روز میں سات نے گناہ افراد کو شہید کردیا فوج کے ترجمان کے مطابق پاکستان سے بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں داخل ہونے والے چار مشتبہ عسکریت پسندوں کوہفتے کے روز کپواڑہ کے علاقے میں ہلاک کر دیا گیا جبکہ جمعہ کے روز ایک جھڑپ میں بھی تین افراد کو ہلاک کر دیا گیا تھا۔ بھارتی فوجی افسر نے نام مخفی رکھتے ہوئے نیوز ایجنسی کو بتایا کہ چھ نعشوں کے ساتھ اسلحے کو قبضے میں لیا گیا۔ کچھ سیاسی تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ گزشتہ روز بھارتی راجیہ سبھا میں قائد حزب اختلاف اور بی جے پی کے سینئر راہنماارون جیٹلی نے کہا تھا کہ مسئلہ کشمیر نہرو نے پیدا کیا اور سزا بھارتی عوام کو مل رہی ہے۔ پاکستان مقبوضہ کشمیر کو کبھی بھی بھارت کا حصہ تسلیم نہیں کرے گا۔ انتظامیہ ان کا تو کچھ بگاڑ نہیں سکتی اس لئے کمبختی بے چارے کشمیریوں کے حصے میں آئی۔ بی جے پی کے راہنمانے ایوان میں یہ بھی کہا تھا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے چھ دہائیاں قبل دفعہ 370 کو آئین میں رکھنے کی مخالفت کی تھی اور آج بھی اس کے مخالف ہیں۔ پاکستان کیساتھ موجودہ صورتحال میں بات چیت ملک کیلئے تشویشناک ہے۔ ایک طرف پاکستان کنٹرول لائن پر دراندازی اور جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی ہورہی ہے اور دوسری جانب یو پی اے حکومت پاکستان کو گلے لگارہی ہے۔ ارون جیٹلی نے کہا کہ اگر بات چیت روک دی جاتی ہے تو پاکستان پر مزید دباو بڑھ جاتا ہے اور جو ممالک پاکستان کیساتھ بات چیت کی وکالت کرتے ہیں وہ بھی پاکستان پر دباو ڈالتے کہ دراندازی کو روک دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی پاکستان کیساتھ جنگ کیخلاف ہے‘ بات چیت کیلئے فی الحال یہ وقت موزوں نہیں اس کیلئے پاکستان کو اپنی سرزمین بھارت مخالف سرگرمیوں کیلئے استعمال کرنے کا سلسلہ بند کرنا ہوگا۔