مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نےرضاکارانہ خدمات پرتنظیم وائی فائی کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور شیلڈ سے نوازا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
لندن میں حلال فوڈ میلہ، کھانے پکانے کے مقابلوں میں غیر مسلموں کی بھرپوردلچسپی
لندن ... برطانوی دارالحکومت کی سب سے بڑی نمائش گاہ لندن ایکسل میں حلال فوڈز کی نمایش ہوئی دو روز تک جاری رہنے والے دنیا کے سب سے بڑے حلال خوراک میلے میں لوگوں کا جوش و خروش دیدنی تھا..اس میلے میں چاکلیٹ کی مدد سے تیار کردہ میٹھا’چوکلیٹئر‘ بھی دستیاب تھے جسکے ے بانی انیش پوپٹ کا دعویٰ ہے کہ پانی کی مدد سے تیار کردہ ’چوکلیٹئر‘ کے منفرد لذیذ ذائقے سے کوئی بھی انکار نہیں کر سکتا۔ میلے میں شرکت کے لیے ضروری نہیں تھا کہ آپ صرف حلال کھانا ہی کھاتے ہوں اسلیے خوراک کے شوقین افراد کی بڑی تعداد اس میلے میں طرح طرح کے کھانوں سے لطف اندوز ہوی۔ اس میلے کا انعقاد لندن میں اس لیے کیا گیا کیونکہ برطانیہ میں مقیم مسلم آبادی کا ایک تہائی لندن میں رہائش پذیر ہے اور یہاں حلال خوراک کا کاروبار دو لاکھ پاؤنڈ تک ہے اور مجموعی طور پر برطانیہ میں سالانہ سات لاکھ پاؤنڈ مالیت کی حلال خوراک فروخت کی جاتی ہے۔ اس میلے کے ایونٹ ڈائریکٹر نعمان خواجہ سابق ڈینٹسٹ ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ وہ ہمیشہ سے چاہتے تھے کہ وہ ڈینٹسٹ کا پیشہ چھوڑ کر اپنا کاروبار شروع کریں لیکن اس میلے کا خیال ان کے ساتھی ڈاکٹر عمران کوثر کو آیا۔ میلے میں براہ راست کھانا پکانے کے فن کا مظاہرہ ہوا اور اس میں شریک مشہور باورچی جین کرسٹوفر نویلی بھی شامل تھے..میلےکا ایک مقصد یہ بھی تھا کہ لوگوں کو بتایا جا سکے کہ کسی بھی اعلیٰ ریستوران سے حلال کھانا منگوا سکتے ہیں اور اس میں شرکت کرنے والوں کو آگاہ کیا گیا کہ اب بکنگھم پیلس، ڈاؤننگ سٹریٹ اور میئر ٹاؤن ہالز میں بھی مہمانوں کو حلال کھانا پیش کیا جاتا ہے لیکن منتظین کے مطابق ان کا اصل ہدف متوسط طبقے کے مسلمان تھے جن کے برطانیہ بھر میں ریستوران میں جانے کی تبدیلی آ رہی ہے۔