مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
حقوق انسانی کونسل کی جانب سے اہم قراردادوں کی منظوری خوش آئند ہے: بیرونس وارثی
لندن... برطانیہ کی سینئر فارن آفس منسٹر بیرونس وارثی نے اقوام متحدہ کی حقوق انسانی کونسل کی جانب سے صومالیہ، شام اور سوڈان کے حوالے سے اہم قراردادوں کی منظوری کو خوش آئند قرار دیتے ھوئے کہا ہے کہ برطانیہ شام میں حقوق انسانی کی مسلسل بگڑتی ہوئی صورتحال پر پوری دنیا میں پائی جانے تشویش میں برابر کاشریک ہے، کشیدگی انتہا کو پہنچ چکی ہے اور ہماری نیک تمنائیں شام کے عوام کے ساتھ ہیں، ہم قرارداد میں انکوائری کمیشن کو شام میں کام کرنے کی اجازت دینے ،کیمیاوی اسلحہ کے استعمال کی مذمت کی بھرپور حمایت اورجنسی تشدد کی روک تھام پر مبنی قرارداد کی حمایت کرتے ہیں۔ برطانیہ شام میں کیمیاوی ہتھیاروں کے استعمال کے حوالے سے انکوائری کمیشن کی تشویش میں شریک ہے 21 اگست کے حملے نے ہمیں خوفزدہ کردیا ہے اوربرطانیہ بڑھتی ہوئی بین الاقوامی اتفاق رائے سے متفق ہے کہ شام کی حکومت اس کی ذمہ دار ہے، ہم شام کی حکومت کی جانب سے اپنے کیمیاوی ہتھیار کم از کم وقت میں بین الاقوامی کنٹرول میں دینے کی تجویز کاخیرمقدم کرتے ہیں،برطانیہ کو صومالیہ کے بارے میں قرارداد پر اتنی وسیع حمایت اور سپانسر شپ میں شراکت پر خوشی ہوئی ہے، یہ بین الاقوامی برادری کی جانب سے صومالیہ کی حمایت میں کھڑے ہونے کی خواہش کااظہار ہے، کیونکہ اس سے حقوق انسانی کاتحفظ ممکن ہوسکے گا۔ فارن آفس سے جاری کردہ بیان میں انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں صومالیہ کو درپیش حقوق انسانی کے چیلنجوں سے آنکھیں نہیں چرانی چاہئیں، ہم صومالیہ کی حکومت کو درپیش بڑے مسائل جن میں کشیدگی کے دوران جنسی تشدد ،بچوں کے خلاف تشدد ،ماورائے عدالت قتل، صحافیوں کونشانہ بنائے جانے اور اندرون ملک بے گھر ہونے والے لوگ سرفہرست ہیں نمٹنے میں مدد دیں گے۔ میں سوڈان میں حقوق انسانی کی صورتحال پر مسلسل بین الاقوامی توجہ کاخیرمقدم کرتا ہوں،برطانیہ کو سوڈان میں جنگ زدہ اور غیر جنگ زدہ علاقوں میں مجموعی طورپرحقوق انسانی کی صورتحال پر تشویش ہے ۔ برطانیہ سوڈان میں تمام لوگوں کے حقوق انسانی کے تحفظ کیلئے سوڈان کی حکومت کے ساتھ کام کرنے کوتیار ہے۔ انہوں نے کہا برطانیہ وسطی افریقی جمہوریہ کے حوالے سے قرارداد کی اتفاق رائے سے منظوری کاخیرمقدم کرتا ہے ۔برطانیہ عوامی جمہوریہ کانگو کے بارے میں افریقی ممالک کی پیش کردہ قرارداد کابھی خیر مقدم کرتاہے جس نے جنگ کے دوران جنسی تشدد کی روک تھام کیلئے پینل قائم کیا ہے۔ جنگ کے دوران جنسی تشدد کی روک تھام کیلئے برطانوی حکومت کی پیش رفت کی بنیاد ہمارا یہ یقین ہے کہ جنسی تشدد جیسے مسئلے کی روک تھام کشیدگی کی روک تھام، سیکورٹی اورپوری دنیا میں امن کے قیام کابنیادی جزوہے۔ برطانیہ نے ایک مرتبہ پھر حقوق انسانی کونسل میں غلامی کی نئی اقسام کے حوالے سے ایک قرارداد پیش کی ہے جس میں غلامی کی ہر شکل کے مکمل خاتمے پر زوردیاگیا ہے برطانیہ غلامی کی سختی کے ساتھ مذمت کرتا ہے اور اس کے خاتمے کیلئے پرعزم ہے۔