مقبول خبریں
نائجیریا کمیونٹی ایسوسی ایشن کا میئر چیئرٹی فنڈریزنگ ڈنر کا اہتمام ،مئیر کونسلر محمد زمان کی خصوصی شرکت
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
.مسیحی برادری سے اظہار یکجہتی کیلئے پاکستان تحریک انصاف لندن کاشمع بردار مظاہرہ
لندن...مسیحی برادری سے اظہار یکجہتی کیلئے پاکستان تحریک انصاف لندن کے زیر اہتمام ٹرافلگر سکوائر پر شمع بردار مظاہرہ کیا گیا. پی ٹی آئی لندن کے صدر شہباز خان سمیت دیگر شرکا نے کہا کہ دہشت گردی کی وجہ سے ہونے والی ہلاکتوں کے سبب پوری دنیا میں اسلام اور پاکستان کی بدنامی ہورہی ہے ۔انھوں نے کہا اس طرح کے شرمناک ملوث عناصر پاکستان کے دشمن ہیں،انھوں نے پاکستان کی سیاسی پارٹیوں سے مطالبہ کیا کہ ہو دہشت گردی کوشکست دینے کیلئے مشترکہ حکمت عملی ترتیب دیں، انھوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے قائد عمران خاں کی جانب سے طالبان کے ساتھ مذاکرات کامطالبہ درست ہے کیونکہ کم وبیش 12 سال کی جنگ کا کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوا اور اس نے پاکستان کو تباہی کی جانب دھکیل دیا ہے، پی ٹی آئی لندن کے صدر شہباز خاں نے کہا کہ اوورسیز پاکستانی پشاور چرچ میں دھماکوں کی پرزور مذمت کرتے ہیں، مسیحی بھائیوں اور بہنوں پر اس حملے نے ہمیں افسردہ کردیا ہے،مسیحی برادری نے پاکستان کی حدود میں رہتے ہوئے پاکستان کی فلاح وبہبود کیلئے دوسروں کی طرح ہی کام کیا ہے، یہ پاکستان کا خوبصورت چہرہ ہیں لیکن پاکستان کے دشمن پاکستان کاچہرہ مسخ کرنا چاہتے ہیں۔اور ہم اپنے مسیحی بھائیوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔دہشت گردی کی اس جنگ میں پاکستان کی ہر کمیونٹی نے نقصان اٹھایا ہے، اب ہمیں اپنے وطن پاکستان میں قیام امن کیلئے متحد ہوجانا چاہئے، دشمن کو ہماری صفوں میں دراڑیں ڈالنے ہمیں تقسیم کرنے کاموقع نہ دیں، انھوں نے کہا کہ امن کی راہ بہت دشوار گزار ہے اس کیلئے بہت زیادہ تحمل کی ضرورت ہے لیکن پاکستان کوسپر نہیں ڈالنی چاہئے اور پاکستان کے خلاف لڑنے والے تمام لوگوں سے مذاکرات کرنے چاہئیں اور امن کو ایک موقع دینا چاہئے۔ شرکا شمعین ہاتھوں میں اٹھائے 2 گھنٹے سے زیادہ دیر تک ٹرافلگر سکوائر پر کھڑے رہے..