مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستانی حسام علی حیدر کی برطانیہ میں شاندار کارکردگی، شہزادہ فلپ نے کورونیشن کپ پیش کیا
لندن:ڈیوک آف اینڈنبرگ شہزادہ فلپ اور رائل سلیوٹ کے پیٹر مور، گلوبل پرسٹیج برانڈ ڈائریکٹر نے پاکستان سے تعلق رکھنے والے حسام علی حیدر، کینیڈا سے تعلق رکھنے والے ٹیم کپتان فریڈ مینیکس، جنوبی افریقہ کے کرس میکنزی اور نیوزی لینڈ کے جان پال کلارکن کو شاندار کورونیشن کپ پیش کیا جو انہیں گارڈز پولو کلب میں جی ٹی بینک کامن ویلتھ کی ٹیم کی جانب سے انگلینڈ کو شاندار کھیل کے بعد 12-11 سے شکست دینے پر دیا گیا۔ کورنیشن کپ زیادہ گول والا کھیل ہے جس میں ہر ٹیم کے 27 گول ہوتے ہیں اور اس کا شمار ہر سال منعقد ہونے والے پولو کے سب سے بڑے ٹورنامنٹس میں ہوتا ہے۔ تاریخ میں پہلی بار ایشیا کا کوئی کھلاڑی کامن ویلتھ کی ٹیم میں شامل تھا جو پاکستان کے لئے اعزاز کی بات ہے۔ حسام علی حیدر اپنے کیریئر کے ہر قدم پر اپنے ملک کی نمائندگی کرتے چلے آ رہے ہیں اور دنیا بھر میں سبز پرچم لہراتے چلے آ رہے ہیں۔ اس موقع پر موجود مہمانوں میں برطانیہ میں پاکستان کے ہائی کمشنر سید ابن عباس اور ان کی اہلیہ کے علاوہ پاکستان کی حمایت کرنے والے تماشائیوں کی ایک بڑی تعداد بھی شامل تھی۔ ان میں پاکستان اور برطانیہ دونوں ملکوں سے تعلق رکھنے والے افراد شامل تھے جو پاکستانی پرچم لہرا رہے تھے اور جنہوں نے ہر بار ٹیم کامن ویلتھ کے گول کرنے پر خوب تالیاں بجائیں۔ میچ کانٹے دار رہا اور حسام کے ساتھ ساتھ ٹیم کے دیگر کھلاڑیوں کے شاندار کھیل کی بدولت انہیں شاندار فتح نصیب ہوئی۔ یہ میچ ہرلنگ ہیم پولو ایسوسی ایشن کی جانب سے کرایا جانے والا اہم ترین میچ ہے جس کا اہتمام یہ تنظیم 1970 کی دہائی سے کر رہی ہے لیکن اس سال جو شاندار کھیل دیکھنے کو ملا اس پر کئی لوگوں کا کہنا تھا کہ یہ ا ب تک کا بہترین میچ تھا جس کی ایک اور خاص بات یہ تھی کہ یہ ملکہ برطانیہ کی 90 ویں سالگرہ کے ساتھ منعقد ہوا۔ حسام علی حیدر نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ میں اس کپ کو عبدالستار ایدھی کے نام کرتا ہوں جن کا انتقال ہمارے ملک کا سب سے بڑا نقصان ہے کیونکہ انہوں نے جس طرح پاکستان کی نمائندگی اس طرح آج تک کوئی نہیں کر پایا۔