مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ میں پاکستانی ماہرین نفسیات اور ڈاکٹرز کی قوم کیلئے سوچ قابل ستائش ہے: لارڈ نذیر
برمنگھم... برطانیہ میں عالم اسلام کی معروف شخصیت لارڈ نذیر احمد نے کہا ہے کہ پشاور میں ہونے والے خود کش حملے کی جس قدر مذمت کی جائے کم ہے دہشت گردوں نے بے قصور افراد کو قتل کرکے یہ ثابت کردیا ہے کہ قاتل نہ انسان ہیں نہ مسلمان ہیں نہ وہ پاکستانی ہیں اور نہ ہی اس قابل ہیں کہ انہیں پختون یا اسلام کا ماننے والا سمجھاجائے وہ صرف اور صرف مجرم ظالم درندے اور بے رحم لوگ ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے برمنگھم میں سندھ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام شہید بے نظیربھٹو میڈیکل یونیورسٹی لاڑکانہ اور برٹش پاکستانی سائیکاٹرسٹس ایسوسی ایشن کے تعاون سے لاڑکانہ میں شروع نفسیاتی مریضوں کے علاج کے پراجیکٹ کی مدد کے لئے ہونے والے ڈنر سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا اس موقع پر تمام حاضرین سے درخواست کی کہ وہ ایک منٹ کے لئے کھڑے ہوجائیں اور اپنے عیسائی بہن بھائیوں کی سراسر ناجائز اور ظالمانہ موت پر دلی تعزیت اور دکھ کااظہارکریں۔ انہوں نے اس موقع پر پاکستان کی سلامتی، بقا اور استحکام کے لئے خصوصی دعا بھی اور پاکستان میں دہشت گردی کے خاتمے اور غریب عوام کے تحفظ اور سلامتی کے لئے جذبات کااظہار کیا۔ اس موقع پر سانحہ پشاور پر حاضرین آبدیدہ ہو گئے اور انہوں نے سانحہ پشاور کے متوفیوں اور متاثرین سے ہمدردی اوردکھ کااظہار کیا۔ لارڈ احمد نے کہا کہ میرے لئے یہ بات باعث فخر ہے کہ ہمارے بہترین ماہرین نفسیات جو برطانیہ میں اپنا خاص مقام رکھتے ہیں انہوں نے اپنے آبائی وطن میں اپنے شاندار تجربے مہارت اور اپنے خصوصی کردار کے ساتھ ایک بہترین منصوبہ شروع کیا ہے۔ تقریب کے منتظم اور سندھ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ڈاکٹر صفی افغان نے اپنی تقریر میں کہا کہ ہم پورے پاکستان میں اس اہم ترین اور تشویشناک نفسیاتی بیماریوں کے مسئلے پر کام کرنا چاہتے ہیں یہ بے حد اہم اور ہم سب کی توجہ کا مستحق مسئلہ ہے۔اس موقع پر ڈاکٹر متین درانی چیر مین برٹش پاکستانی سائیکاٹرسٹس ایسوسی ایشن نے سندھ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے ساتھ اپنے مکمل تعاون اور مدد کا اعلان کیا۔پروگرام میں ورلڈ ایسوسی ایشن آف سائیکلوجیکل ری ہیبلی ٹیشن کے صدر ڈاکٹر افضل جاوید نے خصوصی طورپر لاڑکانہ میں شروع ہونے والے ماڈل پراجیکٹ پر خوشی کااظہار کیا انہوں نے کہا کہ اگر پاکستانی ڈاکٹروں اور معالجین نے اپنے کام اور خدمات سے پاکستان کا نام روشن کیا ہے تو پھر پاکستان کے لئے عملی طورپر بھی کام کرنا چاہیے اس سلسلے میں سندھ ڈاکٹر ایسوسی ایشن کا یہ پہلا قدم یقینا ایک تاریخی اور موثر قدم ثابت ہوگا۔ اس موقع پر برطانیہ کے ایک انگریز نفسیاتی ادارے کی کیئرز ڈون لوئیس نے اپنے تجربات اور مشاہدات بیان کیے۔ جبکہ ڈین انٹرنیشنل ٹرسٹ کے ڈاکٹر خورشید احمد نے بھی خیالات کااظہار کیا۔تقریب کا آغاز تلاوت کلام مجید سے زین راجہ نے کیا۔ ڈاکٹر نواز بنگش، ڈاکٹرقمرافغان ڈاکٹر افضل شیخ، ڈاکٹرشہاب کلہوڑہ، ڈاکٹرغلام قادر طارق، ڈاکٹر طیب محسن اور دیگر شخصیات بھی تقریب میں موجود تھیں۔