مقبول خبریں
عبدالباسط ملک کے والدحاجی محمد بشیر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعائیہ تقریب
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ میں آباد پاکستانی ہر شعبہ میں نمایاں کردار ادا کر رہے ہیں: ہائی کمشنر سید ابن عباس
لندن:برطانیہ میں آباد پاکستانی ہر شعبہ زندگی میں نمایاں کردار ادا کر رہے ہیں،معاشرے میں فعال ہونے اور مقامی کمیونٹیز کے ساتھ اینٹی گریٹ ہونے کی ضرورت ہے،فرانس میں دہشت گردی کا واقعہ قابل مذمت ہے،برطانیہ میں مسلمانوں کو بھی چوکنارہنا چاہئے،ڈبلیو سی او پی برطانیہ اور پاکستان کے درمیان دوستانہ تعلقات کے فروغ کیلئے پل کا کردار ادا کر رہا ہے،ان خیالات کا اظہار ورلڈ کانگریس اوورسیز پاکستانیز کے چھوتھے سالانہ عید اور اینٹی گریشن ڈنر سے خطاب کرتے ہوئے لارڈ طارق،ہائی کمشنر سید ابن عباس،سینیٹر جنرل ’’ر‘‘ عبدالقیوم،سید قمر رضا،سجاد کریم ایم ای پی اور دیگر مقررین نے کیا،ہوم آفس کے وزیر لارڈ طارق احمد نے کہا کہ ہم فرانس میں دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہیں اورہم وہاں کی عوام کے ساتھ کھڑے ہیں،وہاں دہشت گردوں نے خوشیاں منانے والے ہر عمر کے افراد کو نشانہ بنایا،دہشت گردی اپنے مقاصد میں کامیاب ہونے کیلئے برطانیہ میں بھی نفرت کا بیج بو کر کمیونٹیز کو تقسیم کرنا چاہتے ہیں،میں نے آج بھی مختلف مساجد کے امامز اور تنظیموں کے سربراہوں کو فون کر کے تسلی دی ہے اور اگر کسی کے ساتھ کوئی نا خوشگوار واقعہ پیش آتا ہے تو اسے فوراً پولیس کو رپورٹ کرنی چاہئے،پولیس اس بات کی پابند ہے کہ وہ ہر واقعہ کو رپورٹ کرے،انہوں نے کہا مہمان خصوصی پاکستانی ہائی کمشنر سید ابن عباس نے کہا کہ فرانس میں دہشت گردی کے واقعہ کی حکومت پاکستان نے شدید مذمت کی ہے اور ہم سب بہتر ان کے غم کو کون سمجھ سکتا ہے،ہم خود ایک عرصہ اس کو بھگت رہے ہیں لیکن اب ہماری مسلح افواج کی قربانیوں کے سبب حالات بہت بہتر ہوگئے ہیں،اب دہشت گردی کا مقابلہ کرنا کسی ایک اکیلے ملک کے بس کی بات نہیں بلکہ پوری دنیا کو اس مقصد کیلئے متحد ہونا ہو گا،انہوں نے کہا کہ معاشرے میں اینٹی گریشن کیلئے ڈبلیو سی او پی کی کاوشیں لائق تحسین ہیں اور یہ تنظیم پاکستان اور برطانیہ کے درمیان دوستانہ تعلقات کے فروغ کیلئے بھی پل کا کردار ادا کر رہی ہیں،سید ابن عباس نے کہا کہ ایسی تقریبات کی ضرورت جتنی اب ہے پہلے کبھی نہ تھی،اب ہمیں معاشرے کے دیگر افراد کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم کرنا ہوں گے،انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کرنے والے کسی مذہب اور ثقافت کے نمائندے نہیں یہ صرف مجرم ہیں،یورپی پارلیمنٹ کے رکن سجاد کریم نے کہا کہ ڈبلیو سی او پی کے تمام ارکان کی دعائیں اور ہمدردیاں فرانس میں ہونے والی دہشت گردی کے متاثرین کے ساتھ ہیں،استنبول اور بغداد کے بعد فرانس کے شہر نیس میں ہونے والی دہشت گردی اس بات کا واضع اظہار ہے کہ یہ دہشت گرد بلا تفریق لوگوں کو نشانہ بنا رہے ہیں اور ان میں یہ صلاحیت بھی موجود ہے کہ وہ جہاں چاہیں کارروائی کر سکتے ہیں،ہمیں اپنے مشترکہ دشمن سے نمٹنے کیلئے متحد ہونا ہو گا،انہوں نے کہا کہ برطانیہ یورپ میں پاکستان کا بہترین دوست ہے اور سابق وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے پاکستان اور برطانیہ کے درمیان بڑھتے ہوئے تجارتی تعلقات پر اطمینان کا اظہارکیا تھا،انہوں نے کہا کہ برطانیہ میں تمام پاکستان نژاد سیاستدان دونوں ممالک کے درمیان بہتر تعلقات کے پیام کیلئے پل کا کردار ادا کر رہے ہیں سینیٹر جنرل ’’ ر‘‘ عبدالقیوم نے کہا کہ اوورسیز پاکستانی ہمارے وطن کا اثاثہ ہے اور میں انہیں یہ بتانا چاہتا ہوں کہ ہمارا وطن مشکلات کا مقابلہ کرتے ہوئے آگے بڑھ رہا ہے اور ہر گزرتے لمحہ کے ساتھ ترقی کر رہا ہے ہمیں فخر ہے کہ ملک میں عدلیہ اور میڈیا آزاد ہے اور سول سوسائٹی فعال ہے،انہوں نے کہا کہ اتنے سارے لوگوں کو اکٹھا دیکھ کر انتہائی خوشی ہوئی ہے،ڈبلیو سی او پی کے چیئرمین سید قمر رضا نے کہا کہ آج کے پروگرام کا بنیادی مقصد عید کی خوشیاں منانا اور مختلف مذاہب اور رنگ و نسل کے لوگوں کے درمیان یکجہتی پیدا کرنا ہے،انہوں نے کہا کہ فرانس میں دہشت گردی کا جو واقعہ ہوا اسے ہم سے زیادہ کون سمجھ سکتا ہے کیونکہ ہم خود ایک عرصہ سے دہشت گردی کی لعنت کا مقابلہ کر رہے ہیں،تنظیم کے بانی ڈائریکٹر ناہید رندھاوا نے کہا کہ پاکستانی امن سے محبت کرنے والے لوگ ہیں اور ہم پاکستان اور برطانیہ کے مضبوط تعلقات کے خواہاں ہیں،انہوں نے کہا کہ پاکستان میں دہشت گردی کے سبب2.5بلین ڈالر کا نقصان ہو چکا ہے،پاکستان کی قومی اسمبلی کے رکن رانا افضل خان نے کہا کہ پاکستان تیزی کے ساتھ ترقی کی منازل طے کر رہا ہے،ہمیں کئی چیلنج بھی درپیش ہیں جن کا ہم مقابلہ کر رہے ہیں انہوں نے اوورسیز پاکستانیوں کا خیر مقدم کیا اور کہا کہ پاکستان برطانیہ میں زندگی کے ہر شعبہ میں نمایاں ترقی کر رہے ہیں،محبوب چوہدری نے کہا کہ ڈبلیو سی او پی بنانے کا مقصد ہی یہ تھا کہ پاکستانی کمیونٹی کو معاشرے میں فعال کیا جائے،تقریب کے میزبان عارف ملک نے کہا کہ اس عشائیہ میں37ممالک کے لوگ شریک ہیں اور ہم انہیں پاکستان کا خوبصورت چہرہ دکھانا چاہتے ہیں،آج مختلف ممالک کے لوگوں نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ آج کی تقریب کا مقصد یہ ہے کہ لوگوں کا مل جل کر بیٹھنے کا موقع ملے،پاکستان کا دورہ کرنے والے پروفیسر ٹونی بیزان نے بتایا کہ جب انہوں نے لوگوں کو بتایا کہ وہ پاکستان جا رہے ہیں تو لوگوں نے انہیں خوفزدہ کرنے کی کوشش کی لیکن پاکستان جا کر احساس ہوا ہے کہ وہ لوگ غلط تھے کیونکہ مجھے پاکستان میں بہت پیار ملا وہ انتہائی ملنسار اور مہمان نواز لوگ ہیں،انہوں نے سکرین پر پاکستان کی تصاویر بھی دکھائیں اور بتایا کہ پاکستانی انتہائی ذہین لوگ ہیں جہاں نا خواندہ افراد بھی سبزی یا فروٹ فروخت کر کے وقت اپنا حساب کتاب با آسانی کر لیتے ہیں،انہوں نے کہا کہ پاکستان میں قیام کے دوران انہوں نے ایک لمحہ کیلئے بھی خوف محسوس نہیں کیا،تقریب میں پاکستانی ہائی کمیشن کے سبکدوش ہوکر جانیوالے افسران سمیت دیگر افراد کو ڈبلیو سی او پی کی جانب سے ایوارڈ بھی دیئے گئے،تقریب کے اختتام پر سفید فام گلو کارہ تانیہ ویلز نے اردو غزلیں سنا کر خوب داد حاصل کی۔