مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بین ا لا ا قو ا می چیر ٹی مسلم ایڈ کی جانب سے رمضان مہم 2016 کا باضابطہ آغاز کر دیا گیا
لندن: بین ا لا ا قو ا می چیر ٹی تنظیم مسلم ایڈ نے اپنی رمضان مہم 2016 کا باضابطہ آغاز کر دیا۔ بر طا نو ی ہائوس آف کامنز میں ہونے والی تقریب اجراء میں تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی نامور شخصیات نے شرکت کی جس میں اس سال ماہ رمضان کے لئے مسلم ایڈ کے منصوبوں کا خاکہ پیش کیا گیا اور گزشتہ سال کی مہم پر جوابی آراء بھی دی گئیں۔ شام کا آغاز ویسٹ لندن کے المنار مسلم کلچرل اینڈ ہیریٹیج سنٹر کے امام احمد داہدو کی تلاوت کے ساتھ ہوا۔ ڈاکٹر صہیب حسن نے رواں سال کی مہم کے مرکزی پیغام ’’You Give, We Serve‘‘ کا تعارف پیش کیا۔ انہوں نے ماہ رمضان کے دوران مسلم ایڈ کی سرگرمیوں کے بارے میں بھی بتایا جن میں ’’فیڈ دی فاسٹنگ‘‘ پروگرام بھی شامل ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ برطانیہ میں غربت کا مسئلہ بھی نظرانداز نہیں ہونا چاہئے اور گزشتہ سال کی طرح اس ماہ رمضان میں بھی ہمارے اپنے قریبی علاقوں میں مقیم کم آمدنی والے خاندان اور بے گھر افراد ’’فیڈ دی فاسٹنگ‘‘ پروگرام سے مستفید ہوں گے۔ تقریب اجراء میں اظہار خیال کرتے ہوئے رائٹ آنریبل سٹیفن ٹمز ایم پی نے دنیا بھر میں مسلم ایڈ کی سرگرمیوں کی افادیت پر اظہار خیال کیا اور کہا کہ مسلم ایڈ نے ان لوگوں تک پہنچنے کے لئے شاندار کام کیا ہے جنہیں دنیا بھر میں مدد کی سب سے زیادہ ضرورت ہے۔ انہوں نے عقائد کے درمیان مختلف سرگرمیوں کی اہمیت کو بھی اجاگر کیا جن پر مسلم ایڈ غربت سے نمٹنے کے لئے اشتراک عمل سے کام کر رہی ہے۔ رائٹ آنریبل تسمینہ احمد شیخ او بی ای نے زور دیا کہ مسلمانوں کو اس طرز کی چیریٹی سرگرمیوں میں بھرپور طریقے سے حصہ لینا چاہئے جن پرمسلم ایڈ کام کر رہی ہے تاکہ انتہاپسندی کی تمام شکلوں سے نمٹا جا سکے اور اس بیانیہ کا جواب دیا جا سکے کہ انتہاپسندی کی کارروائیاں ہرگز اسلام نہیں۔ سابق لارڈ چیف جسٹس رائٹ آنریبل لارڈ وولف نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسلم ایڈ کی دانشمندی ہے کہ اس نے قیدیوں کی بحالی کو بھی اپنی سرگرمیوں کا حصہ بنایا ہے اور مسلم ایڈ دنیا بھر میں لوگوں کو اچھے کام کرنے کی طرف مائل کرنے میں کامیاب رہی ہے۔ انہوں نے ایک اطمینان بخش اور ثمرآور رمضان کی نیک خواہشات کے ساتھ اپنی تقریر کا اختتام کیا۔ مسلم ایڈ کے قائمقام سی ای او شعیب یوسف نے ان مشکلات پر روشنی ڈالی جن سے این جی اوز بالخصوص مسلم این جی اوز دوچار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اصل چیز یہ نہیں کہ زندگی کس نے بچائی، اصل بات یہ ہے کہ زندگی بچائی گئی۔ انہوں نے حکومت اور ریگولیٹری اداروں سے اپیل کی کہ وہ پابندیوں کا شکار ممالک میں کام کرنے اور فنڈز کی منتقلی جیسی سرگرمیوں میں پیش آنے والے مسائل کے حل نکالنے کے لئے اس شعبے کے ساتھ مل کر کام کریں۔ خیال تھئیٹر کمپنی نے ایک ایسے شخص کے بارے میں سوڈان کی ایک لوک داستان پر پرفارمنس بھی پیش کی جو اپنی دلیری اور حوصلے کی وجہ سے مشہور تھا۔ اداکار اور قصہ خواں الینور مارٹن نے ان خواہشات کے ساتھ اپنی کہانی ختم کی کہ مسلم ایڈ بھی دلیری اور حوصلے کی انہی صفات کے ساتھ اپنی سرگرمیوں کا سلسلہ جاری رکھے۔ تقریب کے اختتام پر سر اقبال سیکرینی او بی ای نے شرکاء بالخصوص بیرون ملک سے آنے والے مہمانوں، مقررین اور تقریب کے انعقاد میں تعاون کرنے والے سپانسرز کا شکریہ ادا کیا۔ مسلم ایڈ ہر سال اپنی رمضان مہم چلاتی ہے جو اس کی سالانہ بنیادی مہم ہوتی ہے۔ گزشتہ سال مسلم ایڈ نے اپنی اس مہم کے ذریعے 5.6 ملین پائونڈ کی رقم جمع کی جو دنیا بھر میں ہنگامی حالات، دنیا کی بعض غریب ترین کمیونٹیز کو کھانا فراہم کرنے کے پروگراموں، ترقیاتی پروگراموں اور برطانیہ کے ضرورت مند افراد کی مدد کے لئے استعمال کئے گئے۔