مقبول خبریں
سیرت النبیؐ کے پیغام کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لئے میڈیا کا کردار اہم ہے:پیر ابو احمد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
ترکی کو یورپی یونین میں شامل ہونے میں ابھی عشرے لگیں گے : وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون
لندن:برطانیہ کے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے کہا ہے کہ یورپی یونین میں شمولیت کے خواہش مند ملک ترکی کو یونین میں شامل ہونے میں ابھی عشرے لگیں گے ، ان کا کہنا تھا کہ ترکی شاید 3000ء تک یونین کا رکن بن جائے ۔برطانوی ٹی وی کو اپنے ایک انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ یہ بات تو ابھی دور دور تک ممکن نظر نہیں آتی کہ ترکی جلد یورپی یونین میں شامل ہو جائے گا۔ ترکی نے یونین کی رکنیت کی درخواست 1987ء میں دی تھی لیکن جس رفتار سے وہ پیشرفت کر رہا ہے لگتا ہے کہ شاید 3000ء تک وہ رکنیت حاصل کرنے میں کامیاب ہو جائیگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر کبھی ترکی کا یونین میں شامل ہونا ممکن ہوتا دکھائی دیا تو برطانیہ کو بھی دیگر ریاستوں کی طرح ترکی کی رکنیت کو ویٹو کرنا پڑے ۔ قدامت پسند برطانوی وزیر اعظم نے یہ بیان اس لئے بھی دیا کہ برطانیہ کے یورپی یونین میں شامل رہنے یا نہ رہنے کے معاملے پر 23 جون کو ہونے والے ریفرنڈم میں بھی یہ بات اہم موضوع بن چکی ہے کہ آیا مستقبل میں ترکی کو اس بلاک کا رکن بنایا جانا چاہئے یا نہیں۔