مقبول خبریں
سیریا ریلیف کی چیئر پرسن ڈاکٹر شمیلہ کی طرف سے چیرٹی بر نچ کا اہتمام ، کمیونٹی خواتین کی شرکت
مسئلہ کشمیر بارےیورپی پارلیمنٹ انتخابات پر برطانیہ و یورپ میں بھرپور لابی مہم چلائینگے،راجہ نجابت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
سرچ آپریشن
پکچرگیلری
Advertisement
امیگریشن کے نئے قوانین میں بڑے پیمانے پر سختیاں کی گئیں ہیں:بیرسٹر راشد اسلم
لندن : ملکہ برطانیہ نے کل نئے امیگریشن ایکٹ پاس کیا جسکو امیگریشن ایکٹ 2016کا نام دیا گیا ہے اس نئے قانون میں مزید سختیاں کی گئی ہیں جسکے مطابق اگر کوئی بھی بزنس کا مالک کسی غیر قانونی امیگرنٹس کو جاب دیتا ہے اور ہوہم آفس کے اہلکار اسکو گرفتار کر دیتے ہیں تو مالک کاروبار کو 5سال کی سزا ہو سکتی ہے یہ سزا 2سال کیلئے ہر 5سال تک ہو سکتی ہے ۔اگر ہوم آفس کے حکام کی بزنس پیلس پر چھاپا مارتے ہیں تو ان کو اختیار ہو گا کہ وہ اس کاروبار کو 48گھنٹے کیلئے بند کر سکتے ہیں اس دوران کاروبار کا مالک متعلقہ حکام کو اپنے کاروبار پر کام کرنے والے تمام سٹاف کے کاغذات مہیا کریگا اور مکمل وضاحت دے گا کہ آیا جب اس نے ان افراد کو جاب دی تھی تو کیا انکے مکمل کاغذات چیک کیے تھے یا نہیں ، اگر مالک کاروبار ایسا کرتے میں ناکام ہو جاتا ہے تو ہوم آفس مخصوص اقدامات کے تحت کوئی بھی ایکشن لے سکتی ہے یا وہ اس جگہ کو بند رکھے یا وقتاً فوقتاً چیک کرتی رہے اس نئے قانون کے تحت اگر کوئی غیر قانونی شخص کام کرتے ہوئے پکڑا جاتا ہے تو اسکو ہوم آفس نئے قانون کے تحت 6ماہ سزا دے گی اور 6سزا کاٹنے کے بعد اسے اسکے وطن ڈی پورٹ کر دیا جائیگا ۔امیگریشن ایکٹ 2016کے تحت غیر قانونی تارکین وطن کے تمام بنک اکائونٹس کو بند اور منجمد کرنے کے احکامات جاری کیے جائیں ۔علاوہ ازید اگر کوئی تارکین وطن ملازمت یا گھر سے گرفتار ہوتا ہے اور رقم پکڑی جاتی ہے تو اسکی تمام رقم کو سیل کر دیا جائیگا اور وہ واپس بھی نہیں کی جائیگی ، اس قانون کے مطابق امگریشن حکام کو اختیارات دیے گئے ہیں کہ وہ بھی شخص کو روک کر تلاشی لے سکتے ہیں گھر میں گھس کر تلاشی کر سکتے ہیں اور کسی بھی شخص کو (Electric Tag)بھی لگا سکتے ہیں یہ نیا قانون چند ماہ میں نافذ العمل ہو جائیگا ۔