مقبول خبریں
کشمیر سالیڈیرٹی کیلئے یکم فروری سے 11فروری تک تقریبات منعقد کرائی جائیں گی
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
یورپی پارلیمنٹ میں سجاد کریم پاکستان کی بھرپور نمائندگی کر رہے ہیں: سفیر پاکستان یورپی یونین
مانچسٹر ...نارتھ ویسٹ سے یورپی ممبر پارلیمنٹ سجاد کریم ایم ای پی سے ملاقات میں یورپی یونین میں پاکستان کے سفیر منور سعید بھٹی نے پاک یورپی تجارتی روابط کے فروغ کے حوالے سے سجاد کریم کی کاوشوں کی تعریف کی ہے ، ملاقات کے دوران مستقبل کی پاک یورپی تجارتی سکیموں اور فرینڈز آف پاکستان گروپ کے کام کے حوالے سے سجاد کریم جس کے سربراہ ہیں تبادلہ خیال کیا گیا ..منورسعید نے کہا کہ سجاد کریم کی مقصد سے لگن اور کام کے عزم کاکوئی ثانی نہیں ہے، انھوں نے اور ان کے گروپ نے جوکام کیا ہے اس سے یورپی یونین میں پاکستان کی ساکھ بہتر ہوئی ہے اور ہم جانتے ہیں کہ جب بھی پاک یورپی معاملات کی بات ہوگی تو کوئی شخص پاکستان کی وکالت کرنے کیلئے موجود ہوگا۔ فی الوقت یورپی یونین کی پارلیمنٹ ایک تجارتی سکیم کے پیکیج پر تبادلہ خیالات کررہی ہے جسے جنرلائزڈ سسٹم آف پریفرنسز (جی ایس پی+ ) کا نام دیاگیا ہے جس کے تحت پاکستان جیسے ممالک کو یورپی مارکیٹ تک آسان رسائی حاصل ہوجائے گی۔ سجاد کریم کنزرویٹو پارٹی کے قانونی امور کے ترجمان اوریورپی پارلیمنٹ میں فرینڈز آف پاکستان گروپ کے چیئر مین ہیں وہ پاکستان کوجی ایس + کی فہرست میں شامل کرانے کی مہم میں پیش پیش رہے ہیں اور یورپ پاکستان 5 سالہ تعاون کے معاہدے سمیت متعدد دوطرفہ سمجھوتوں میں شامل رہے ہیں، جی ایس پی + کے مسئلے پر سجاد کریم نے کہا کہ یورپی یونین میں اب بہت سے لوگوں کو پاکستان میں یورپی یونین کیلئے موجود مواقع کااحساس ہونے لگا ہے خاص طورپر اس لئے کہ اب یورپی یونین کو جنوب ایشیا میں ایک پارٹنر کی تلاش ہے۔ گزشتہ 2 سال کے دوران یورپی یونین کی خارجہ امور کی سربراہ کیتھرین ایشٹن نے پاکستان کے ساتھ نتیجہ خیز تعلقات قائم کرنے پر از سرنو توجہ مرکوز کی ہے اورجی ایس پی+ تجارتی سکیم درست سمت میں ایک پیش رفت ہے۔