مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
سیاسی پارٹیوں کے لوگ تحریک حق خودارادیت کے ذریعے اپنا نکتہ نظرعوام تک پہنچائیں
بریڈ فورڈ ... جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت یورپ کے زیر اہتمام بریڈفورڈ کی سیدہ آمنہ مسجد میں استحکام پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یوکے انڈی پینڈنٹ پارٹی کے ڈپٹی لیڈر اور نارتھ ویسٹ سے یورپی ممبر پارلیمنٹ پال نٹل، یورپی پارلیمنٹ کے لندن سے امیدوار لارنس ویب، ویسٹ مڈلینڈ سے امیدواران بل ریڈرج، کونسلر جل سیمور و دیگر نے کہا ہے کہ برطانوی سیاسی جماعتیں اور ان کے ممبران پارلیمنٹ مسلمانوں کے مقامی مسائل اور عالمی مصائب پر بھی توجہ دیں برٹش پاکستانی اور کشمیری یہاں کی تمام سیاسی جماعتوں اور آنے والے انتخابات کیلئے امیدواروں تک اپنا نکتہ نظر پہنچا کر دم لیں گے۔ کانفرنس میں برطانیہ کی چوتھی بڑی سیاسی پارٹی یوکے انڈیپنڈنٹ کے یورپی ممبران پارلیمنٹ اور ایشیائی رہنماؤں کی طرف سے کشمیریوں کے حق خودارادیت کی بھرپور حمایت کا اعلان جبکہ برٹش پاکستانیوں کے موثر کردار کو برطانیہ بھر میں اجاگر کیا جائے گا، کشمیری ویارکشائر سے مذہبی اکابرین کی طرف سے استحکام پاکستان کیلئے بیرون ملک تحریک کی طرف سے چلائی جانیوالی مہم میں معاونت کی یقین دہانی، کشمیری خواتین بھی مردوں کے شانہ بشانہ تحریک آزادی کشمیر کے سفارتی محاذ پر اپنی سرگرمیاں جاری رکھیں گی۔ اس موقع پر کامن ویلتھ کیلئے پارٹی کے ترجمان مجیب الرحمن بھٹو، سمال بزنس کے ترجمان امجد بشیر، تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین، سیدہ آمنہ ٹرسٹ کے مہتم علامہ ساجد محمود فراشوی اور ملک رحمت اعوان نے بھی اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا جبکہ کانفرنس کی صدارت وزیراعظم آزاد کشمیر کے مشیر سردار عبدالرحمن خان نے کی۔ کانفرنس کے منتظم اور تحریک حق خودارادیت یورپ کے چیئرمین راجہ نجابت حسین نے مہمانوں کو خوش آمدید کہتے ہوئے کانفرنس کے شرکاء کو بتایا کہ برطانیہ بھر میں پھیلے ہوئے برٹش پاکستانی اور کشمیری مسلمان جہاں اپنے وطن کی آزادی کی تحریک کو سفارتی محاذ پر اجاگر کررہے ہیں وہاں وہ پاکستان کی سلامتی اسکے استحکام اور عالمی سطح پر پاکستان کے خلاف ہونیوالے سازشوں کو بے نقاب کرنے کا عزم لئے برطانیہ کے تمام اہم شہروں میں کانفرنسیں منعقد کرکے یہاں کی چاروں سیاسی پارٹیوں کے ممبران پارلیمنٹ اور امیدواروں کوان کانفرنسوں میں بلا کر عوام کی نمائندگی کا حق ادا کرنے کا مطالبہ کریں گے۔ راجہ نجابت حسین نے کہا کہ بڑی سیاسی پارٹیاں چونکہ اقتدار میں رہ چکی ہیں اس لئے تحریک کے رہنماؤں نے چھوٹی سیاسی پارٹیوں کے لوگوں کو بھی موقع مہیا کیا ہے کہ وہ اپنا نکتہ نظرہم تک پہنچائیں اور ہمارا نکتہ نظر بھی سنیں۔ اس موقع پر یوکے انڈیپینڈنٹ پارٹی کے امیدواروں اور رہنماؤں نے کشمیریوں کو یقین دلایا کہ وہ برطانیہ بھر میں یورپی انتخابات کے دوران مہم میں کشمیری لیڈرشپ کو ہر شہر میں سنیں گے۔ یوکے انڈیپینڈنٹ پارٹی کی خواتین رہنماؤں نے آئندہ ماہ ہونے والی کشمیری خواتین کی کانفرنسوں میں شرکت کرنے اور صرف خواتین سے ملکر کشمیریوں کیلئے جدوجہد کرنے کی یقین دھانی بھی کرائی۔ تحریک کے سرپرست سردار عبدالرحمن خان نے تاریخی حوالوں سے مسئلہ کشمیر پر روشنی ڈالتے ہوئے پاکستان کے عالمی کردار، پالیسیوں پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے عالمی برادری کے ساتھ عالمی معاملات میں شامل ہوکر جو قربانیاں دی ہیں بین الاقوامی برادری کو اس کا احساس کرنا چاہئے۔ انہوں نے پاکستان میں جمہوریت کے فروغ اور پاکستان کے حکمرانوں اور عوام کی کشمیری عوام سے لازوال وابستگی اور حمایت پر انہیں خراج تحسین پیش کیا۔ اس سے قبل تحریک کے رہنماؤں نے برطانیہ کے دورے پر آئے ہوئے جمعیت العلمائے جموں کشمیر کے سربراہ صاحبزادہ پیر محمد عتیق الرحمن فیض پوری اور جمعیت تبلیغ اسلام برطانیہ کے سربراہ پیر معروف حسین نوشاہی اور جمعیت کے مرکزی رہنما چوہدری طالب حسین سے ملاقاتیں کرکے انہیں تحریک کے پروگراموں میں معاونت کی اپیل کی۔ پیر صاحبان نے تحریک حق خودارادیت یورپ کی سرگرمیوں کی تعریف کرتے ہوئے تمام پاکستانیوں اور کشمیریوں پر زور دیا کہ وہ مسئلہ کشمیر کو سفارتی محاذ پر اجاگر کرنے کیلئے تحریک سے تعاون کریں۔ دونوں رہنماؤں نے مسلمانوں پرزور دیا کہ وہ یہاں کی سیاسی پارٹیوں میں شامل ہوکر اپنے مثبت کردار سے اسلام کا نام روشن کریں۔