مقبول خبریں
ایسٹرن پویلین ہال اولڈہم میں آزادکشمیر میں قائم اسلام ویلفیئر ٹرسٹ کے سالانہ چیرٹی ڈنر کا انعقاد
مسئلہ کشمیر بارےیورپی پارلیمنٹ انتخابات پر برطانیہ و یورپ میں بھرپور لابی مہم چلائینگے،راجہ نجابت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
سرچ آپریشن
پکچرگیلری
Advertisement
سنی دیول "سنگھ صاحب دی گریٹ" بن کر بھی "جو بولے سو نہال" نہیں، گردوارہ پربندھک کمیٹی
امرتسر...سکھوں کے متعدد کا میاب فلمی کردار ادا کر کے شہرت حاصل کرنے والے سنی دیول اپنی نئی فلم سنگھ صاحب دی گریٹ میں بلآخر تنقید کی زد میں آگئے ہیں .. جھگڑا کردار کی کسی خامی کا نہیں بلکہ تنازعہ فلم کے نام پر ہے۔ بھارت میں سکھوں کی سب سے بڑی مذہبی تنظیم’شرومنی گردوارہ پربندھک کمیٹی‘ کا کہنا ہے کہ سنگھ صاحب ایک مقدس لفظ ہے۔ اسے ہر کسی کے نام کے ساتھ نہیں لکھا جاسکتا۔ بلکہ، یہ امرتسر میں واقع سکھوں کی عبادت گاہ گولڈن ٹیمپل کے گرنتھیوں اور جتھے داروں کے لئے مخصوص ہے۔ اسے تجارتی مقاصد کے لئے استعمال نہیں کیا جا سکتا۔ سکھوں کی ہی ایک اور تنظیم اکال تخت نے بھی سنگھ صاحب دی گریٹ کا سنجیدگی سے نوٹس لیا ہے۔ اکال تخت کا کہنا ہے کہ اس ٹائٹل سے سکھ کمیونٹی میں غلط فہمیاں پیدا ہوسکتی ہیں۔ اس سے پہلے سنی دیول کی فلم جو بولے سو نہال کو بھی ٹائٹل کی وجہ سے تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ فلم ’غدر ۔ ایک پریم کتھا‘ سے شہرت پانے والے انیل شرما کی ڈائریکٹ کردہ فلم ’سنگھ صاحب دی گریٹ‘ نومبر میں ریلیز کی جائے گی۔