مقبول خبریں
نائجیریا کمیونٹی ایسوسی ایشن کا میئر چیئرٹی فنڈریزنگ ڈنر کا اہتمام ،مئیر کونسلر محمد زمان کی خصوصی شرکت
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
شہیدذوالفقاربھٹو جیسے کرشمائی شخصیت کے حامل لیڈر صدیوں بعد پیدا ہوتے ہیں:مقررین
برمنگھم:شہید ذوالفقار علی بھٹو جیسے کرشمائی شخصیت کے حامل لیڈر صدیوں بعد پیدا ہوتے ہیں،انہوں نے سیاست میں جمہوریت کی بنیاد ڈال کر عام آدمی کو شریک اقتدار کر کے وڈیرا ازم اور موروثی سیاست کا خاتمہ کیا،ملک کو مشترکہ آئین دیکر وفاق پاکستان کو مضبوط اور مستحکم کیا،کشمیرکی آزادی کیلئے ایک ہزار برس تک جنگ لڑنے کا فلسفہ دیکر پارٹی اور حکومتی پالیسی کا عالمی سطح پر مضبوط موقف اپنایا،بالخصوص پاکستانی عوام کو اپنے حقوق کی خاطر آواز بلند کرنے کا جمہوری درس دیا،ان خیالات کا اظہار مقررین نے بانی چیئرمین شہید ذوالفقار علی بھٹو کی اٹھائیسویں سالگرہ پاکستان پیپلز پارٹی برطانیہ کی منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا،تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی برمنگھم نے بانی چیئرمین کی اٹھاسویں سالگرہ کی مناسبت سے ایک روایتی پروقار تقریب کا انعقاد کیا جس کی میزبانی مرکزی رہنما چوہدری طاہر نے کی صدارت قیوم راجہ جبکہ مہمان خصوصی مشیر حکومت محمد سعید مغل ایم بی ای،سابق صدر و ممبر ایڈ ہاک کمیٹی چوہدری شاہ نواز اور وزیر اعظم آزاد کشمیر کی اوورسیز کورآرڈینیٹر برائے خواتین محترمہ انجم جرال تھیں،تقریب میں بزرگ سیاسی رہنما 1986میں محترمہ کے ساتھ پاکستان جانے والے الحاج شریف مغل،چوہدری رفیق کشمیر کمیٹی کے چوہدری عظیم چوہدری رفیق،راجہ عبدالغفور،PYOکے یاسر محمود خان،طاہر بلتھوی کی میزبانی میں منعقدہ تقریب سے محمد سعید مغل ایم بی ای کا کہنا تھا کہ بھٹو نے ملکی ترقی کا وہ بنیادی منشور پیش کیا تھا جس پر عمل کر کے عام آدمی بھی مستفید ہو سکتا تھا، انجم جرال نے کہا کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو انقلابی لیڈر تھے،آج بھی پاکستانی عوام بھٹو کے سحر میں مبتلا ہیں،چوہدری شاہ نواز نے کہا کہ بھٹو90ہزار قیدی بھارت سے ٹیبل ٹاک کے ذریعے چھڑوائے،وہ مسلم ممالک کو ایک فیڈریشن اسلامک بلاک دیکھنا چاہتے تھے،ایٹم بم کی بنیاد رکھ کر انہوں نے ملک کا دفاع مضبوط کیا،قیوم راجہ نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو نے پھانسی کا پھندا چوم لیا مگر اپنے اصولوں پر سودے بازی نہ کی اور یہی درس اپنی قوم کو دے گئے،چوہدری طاہر بلتھوی نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو نے عام آدمی کو اپنے حقوق لینے کا حق دیا،الحاج شریف مغل نے کہا کہ بھٹو جیسی انقلابی شخصیت صدیوں بعد پیدا ہوتی ہیں،یاسر محمود خان نے کہا کہ بھٹو ایک سوچ ایک فکر اور ویژن کا نام ہے،چوہدری وقاص الحق گجر نے کہا کہ بھٹو نہ صرف پاکستان بلکہ عالم اسلام کے عظیم رہنما تھے،آخر میں ملکی استحکام اور ترقی کیلئے دعائیں کی گئیں،قوم بلاول بھٹو کو آئندہ ملک کا وزیر اعظم دیکھنا چاہتی ہے۔