مقبول خبریں
کاروباری شخصیات سید اسد علی ،احمد رضا کی مئیر کونسلر محمد زمان سے ملاقات،مختلف امور پر تبادلہ خیال
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
شہید بے نظیر بھٹو کی آٹھویں برسی کے موقع پرپیپلز پارٹی کے زیر اہتمام برمنگھم میں تقریب
برمنگھم:محترمہ بے نظیر بھٹو زندہ ہوتی تو مقبوضہ کشمیر اب تک آزاد ہو چکا ہوتا،ملک پاکستان میں جمہوریت کا تسلسل اور آئین و قانون کی حکمرانی محترمہ بے نظیر بھٹو کی جدو جہد کا نتیجہ ہے،شہید جمہوریت اور تیسری دنیا کی عظیم قائد نے اپنی اعلیٰ سیاسی بصیرت کی بدولت میثاق جمہوریت دیکر آمریت کا دروازہ ہمیشہ کیلئے بند کر دیا،پاکستان میں دہشت گردی کے خلاف فیصلہ کن جنگ کا آغاز محترمہ بے نظیر بھٹو نے سوات اور وزیر ستان میں پاکستان کا پرچم لہرانے سے کیا تھا، بی بی ہم شرمندہ ہیں، تیرے قاتل زندہ ہیں،ان خیالات کا اظہار پاکستا ن پیپلز پارٹی برطانیہ کے زیر اہتمام دوسرے بڑے شہر برمنگھم کے مقامی ہال میں شہید جمہوریت محترمہ بے نظیر بھٹو کی آٹھویں برسی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کیا،تفصیلات کے مطابق برطانیہ میں محترمہ بے نظیربھٹو کی آٹھویں برسی کی تقریب برمنگھم میں زیر صدارت قیوم راجہ سابق ایڈوائزر پی پی برطانیہ منعقد ہوئی جسکا اہتمام سابق صدر پی پی برمنگھم تقریب کے چیف آرگنائزر چوہدری شاہ نواز،کو آرڈینیٹر الحاج محمد شریف مغل ارشاد عزیر طاہروقار اسلم کیانی اور دیگر نے کیا تھا،وقاص الحق گجر نے تلاوت کلام پاک کی سعادت حاصل کی،مشیر حکومت محمد سعید مغل ایم بی ای نے کہا کہ اگر بی بی زندہ ہوتی تو کشمیر کب کا آزاد ہو چکاہوتا،انہوں نے میزائل ٹیکنالوجی دیکر ملک کا دفاع ناقابل تسخیر بنا دیا،اوورسیز کوآرڈینیٹر برائے خواتین انجم جرال نے کہا کہ بی بی شہید ایک نظریہ اور ایک سوچ کا نام ہے ہم انکے مشن کی تکمیل تک جدو جہد جاری رکھیں گے،محسن باری نے کہا کہ بھٹو خاندان نے جمہوریت کی بنیاد ڈا ل کر عام آدمی کو شریک اقتدار کیا،کونسلر عنصر علی خان نے کہاکہ بھٹو خاندان نے پاکستان کو نڈر بیباک لیڈر شپ دی،الحاج شریف مغل نے کہا کہ انہیں 1986میں محترمہ کے ساتھ پاکستان جانے کا اتفاق ہوا آج انکی آٹھویں برسی کے موقع پر آنکھیں پر نم ہیں،بنات المسلمینBTMکی چیئر پرسن محترمہ سمیرا فرخ نے کہا کہ ایسی لیڈر شپ صدیوں میں پیدا ہوتی ہے اوورسیز پاکستان سالیڈریٹر کے چیئر پرسن جاوید اے ملک نے کہا کہ وہ بھٹو کے ساتھی تھے انکا تعلق بھٹو خاندان سے انتہائی گہرا تھا انکے بچھڑنے کا دکھ ہے،قاری تصور الحق چیئرمین پاکستان فورم نے کہا کہ پیپلز پارٹی برمنگھم کی قیادت خراج تحسین کی مستحق ہے جنہوں نے آج پاکستان اور برطانیہ کی مختلف شعبہ ہائے زندگی کے رہنماء محترمہ بے نظیر بھٹو کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے جمع کیا،محترمہ بے نظیر بھٹو کی تصویر کے سامنے انکی یاد میں خواتین و حضرات نے الگ الگ شمعیں روشن کیں،آخر میں صدر تقریب نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا،بی بی، مخدوم امین،آرمی پبلک سکول کے شہداء سمیت ملکی استحکام کیلئے دعا کی گئی۔