مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نےرضاکارانہ خدمات پرتنظیم وائی فائی کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور شیلڈ سے نوازا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
انسانی حقو ق کے عالمی دن کے موقع پرتحریک کشمیر برطانیہ کے زیراہتمام کشمیر سیمینار
برمنگھم:تحریک کشمیر برطانیہ کے مرکزی سیکٹریٹ کشمیر ہاوس میں انسانی حقو ق کے عالمی دن کے موقع پر اہم تقریب کا انعقاد ، اقوام متحدہ اور عالمی طاقتوں کی طر ف سے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی سرپرستی میںانسانیت حقوق کی سنگین پامالیوں پر خاموشی کو کڑی تنقید کا نشانہ ۔ صدر تحریک کشمیر برطانیہ راجہ فہیم کیانی، صدر تحریک کشمیر یورپ محمد غالب، راجہ ایاز خان ایڈووکیٹ، وقار اسلم کیانی، مفتی عبدالمجید ندیم، اسامہ ایوب، حسین اصغر، کاشف منیر، شاہنواز کیانی، ڈاکڑ خرم بشیر،زمان لالہ، حیات عباسی، چوہدری محمد شکیل اور دیگر نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوے کہا کہ انسانی حقوق کے عالمی دن کی افادیت اور اہمیت اسی وقت نظر آئے گی جب اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کو رکوانے کے لیے عملی اقدامات اُٹھائے گی۔ صدی کا سب سے پرانا اہم ترین تصفیہ طلب مسئلہ کشمیر عالمی برادری کی توجہ کا طالب ڈیڑھ کروڑ انسانوںکے غصب شدہ بنیادی حقوق کا مسئلہ گزشتہ کئی دہائیوں سے عالمی بے حسی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ جنوبی ایشاء سمیت دنیا بھرا کے لیے پائیدار امن کے متلاشی ادارے اور ممالک جب تک کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا نوٹس نہیں لیں گے اس وقت تک قیام امن کے تمام منصوبے بے معنی ہیں۔ بھارتی حکومتوں پر جب بھی عالمی دباو بڑا پاکستان کے ساتھ دو طرفہ مذاکرات کا ڈرامہ رچا کر عالمی برادری کی آنکھوں میں دھول جھونک دی جاتی ہے اور کشمیر کے بنیادی حل طلب مسئلے کو نظر انداز کر دیا جاتاہے ۔ بھارت کی طر ف سے عالمی برادری کو ایک عرصہ سے گمراہ کیے جانے کی وجہ سے کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی داستان طویل ہوتی جارہی ہے ۔ کالے قوانین کا اطلاق، ماورائے آئین گرفتاریوں، زیر حراست اموات، لاپتہ افراد کی طویل فہرست ، بچوں عورتوں پر بوڑھوں پر ظالمانہ تشدد اور ناروا سلوک اور ان تمام حقائق تک غیر جانبدار مبصرین ، عالمی میڈیا کی عدم رسائی، انسانی حقوق کی تنظیموںکے داخلے پر پابندی، فلاحی امداد کی راہ میں غیر ضروری رکاوٹیں بھارتی حکومت کی جارحیت کے منہ بولتے ثبوت ہیں لیکن اقوام متحدہ اور عالمی طاقتیں خامو ش ہیں۔ شرکاء اجلاس نے موجودہ پاک بھارت مذاکرات کو نتیجہ خیز بنانے کے لیے بلا تاخیر کشمیریوں کو شامل مذاکرات کرنے اور مسئلہ کشمیر کو سر ِ فہرست رکھنے اور واضع طور پر اس کے حل کی راہیں تلاش کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔