مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
معاشی ترقی کیلئے پاکستان ملائیشین ماڈل پرعمل کرے گا ، وزیر اعظم کی کابینہ اجلاس میں منظوری
اسلام آباد ...ملائیشین وزیر اعظم کے دفتری امور کے وزیر داتو سری ادریس جالا نے پاکستان کی وفاقی کابینہ کے اجلاس میں خصوصی دعوت پر شرکت کر کے اپنے ملک کی اقتصادی ترقی کے منصوبوں سے متعلق تجربات پر وفاقی کابینہ کو بریفنگ دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملائیشیا کی حکومت نے اپنے وسیع اسٹریٹجک منصوبوں کے اندر رہتے ہوئے قلیل المدتی پروگرام ترتیب دیے ہیں اور ان کی تکمیل کے لیے ایک مدت مقرر کی گئی ہے۔ داتو سری ادریس کے مطابق ان منصوبوں سے نمایاں اقتصادی بہتری آئی ہے اور اس بارے میں نجی و سرکاری شعبے کی شمولیت سے پالیسیاں ترتیب دی گئیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مقامی اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کے لیے اس سارے عمل کو انتہائی سہل رکھا گیا۔ سرکاری بیان کے مطابق پاکستانی وزیر اعظم میاں نواز شریف نے ملائیشیا کی اقتصادی ترقی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ملائیشیا کی حکومت کے ساتھ قریبی تعلقات قائم کر کے ان کے تجربات سے مستفید ہونا چاہتا ہے۔ نواز شریف نے کہا کہ پاکستان ملائیشیا کی کامیابی کی داستانوں سے سیکھ کر انہیں پاکستان میں دہرا سکتا ہے۔ اقتصادی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اگر موجودہ حکومت اقتصادی بہتری کے لیے سنجیدگی سے ملائیشیا کے ماڈل پر عمل کرے تو اس کے بہتر نتائج سامنے آئیں گے۔ معروف اقتصادی تجزیہ کار ڈاکٹر فرخ سلیم کا کہنا ہے کہ ملائیشیا میں احتساب کمیشن اور انسداد بدعنوانی کی ایجنسی انتہائی فعال ہے، جو وہاں کے ترقیاتی ماڈل کی اہم وجوہات ہیں۔ ماہرین کے مطابق پاکستان میں تقریباً 200 کے قریب ایسے سرکاری ادارے اور کارپوریشنز ہیں، جو ماہانہ اربوں روپے کے خسارے میں ہیں۔ وزیر اعظم نواز شریف نے کابینہ کے خصوصی اجلاس سے اپنے خطاب میں کہا کہ کرپشن اور ناقص کارکردگی نے قومی ایئرلائن پی آئی اے سمیت دیگر اداروں کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا ہے، پی آئی اے میں کرپشن اور بدانتظامی کے سبب 3.3 ارب روپے کا ماہانہ نقصان ہو رہا ہے۔ نواز شریف کا کہنا تھا کہ جلد ہی پاکستان کا ایک اعلی سطحی وفد ملائیشیا کا دورہ کرے گا تا کہ دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں خصوصا معیشت کے شعبے میں تعلقات کو مضبوط کیا جاسکے۔ نواز شریف نے اپنے ملائیشین ہم منصب کو بھی دورہ پاکستان کی دعوت دی ہے۔